عالمی بازارِ حصص میں مندی

یونان کے مالی بحران کے اثرات عالمی معیشت پر پڑنے کے خدشات کے باعث عالمی بازارِ حصص میں مندی کا رجحان دیکھنے میں آیا ہے۔

فائل فوٹو
Image caption گزشتہ ماہ بھی یونان کے معاشی بحران کی وجہ سے عالمی حصص بازار میں شدید مندی دیکھنے میں آئی تھی

سرمایہ داروں کو یہ خدشہ ہے کہ یونان کے مالی بحران کی وجہ سے عالمی کساد بازاری میں ہونے والی بہتری رُک سکتی ہے۔ اس خدشے کے باعت دنیا بھر کی سٹاک مارکیٹس میں تیزی سے گراوٹ دیکھنے میں آئی ہے۔

جمعہ کو جاپان کی نکئی انڈیکس میں تین اعشاریہ دو فیصد کمی دیکھنے میں آئی جبکہ آسڑیلیا کے بازار حصص میں انڈیکس ایک اعشاریہ چھ فیصد کم ہو گئے ہیں۔

امریکی کی مارکٹوں میں بھی کمی کا رجحان رہا اور ڈاؤ جونز کے حصص میں نو فیصد کمی دیکھنے میں آئی ہے۔

ایشیائی بازارِ حصص میں بھی کمی دیکھنے میں آئی ہے۔ جنوبی کوریا کی کوسپیی سٹاک ایکسچینج میں دو اعشاریہ دو فیصد اور چین کے شنگھائی بازار حصص میں ایک اعشاریہ نو فیصد کمی ہوئی ہے ۔ اس کے علاوہ ہانگ کانگ اور سنگاپور کے بازار حصص میں کمی ہوئی ہے۔

جاپان کے وزیراعظم نے مندی پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔ جاپان کے مرکزی بینک نے ادائیگیوں کے توازن میں بہتری کے لیے مزید بیس ارب ڈالر کے بیل آؤٹ پیکیج کا اعلان کیا ہے۔

دنیا بھر کے حصص بازروں میں یہ کمی اس وقت دیکھنے میں آئی ہے جب ایک دن پہلے یونان کی پارلیمنٹ نے بچت مہم کے سلسلے میں اخراجات میں کٹوتیوں کی منظوری دی ہے۔ یہ اقدامات معاشی بحران سے نمٹنے کے لیے بین الاقوامی معاشی اداروں کی جانب سے فراہم کردہ اقتصادی پیکج کے بدلے میں کیے گئے ہیں۔

دوسری جانب برطانیہ کے انتخابات میں کسی بھی جماعت کو واضح اکثریت حاصل نہ ہونے کے باعث برطانوی پاؤنڈ کی قیمت میں ڈالر اور یورو کے مقابلے میں کمی دیکھنے میں آئی۔

برطانوی پاؤنڈ میں ڈالر کے مقابلے میں تین سینٹس اور یورو کے مقابلے میں دو سینٹ کمی آئی ہے۔

برطانیہ میں آخری اطلاعات کے مطابق زیادہ تر انتخابی نتائج کا اعلان کیا جا چکا ہے جن کے مطابق کسی جماعت کو واضح برتری حاصل نہیں ہے۔ اس وجہ سے سرمایہ داروں میں خدشات پیدا ہوئے ہیں کہ ایک کمزور حکومت تجارتی خسارے کو کم کرنے کے لیے پالسیوں پر تیزی سے عمل نہیں کر پائے گی۔

اسی بارے میں