یورو کے استحکام کے لیے ہنگامی منصوبہ

یورپی یونین کے وزرائے خزانہ یونان کے مالیاتی بحران سے دیگر ممالک کو محفوظ رکھنے کے لیے پانچ سو ارب یورو کے ہنگامی مالیاتی اقدامات پر متفق ہوگئے ہیں۔

ان اقدامات کے تحت سنگل کرنسی بلاک میں شامل سولہ یورپی ممالک کو چار سو چالیس ارب یورو مالیت کے قرضوں کی ضمانتوں اور یورپی کمیشن کی ساٹھ ارب یورو کی ہنگامی امداد تک رسائی حاصل ہوگی۔

اس کے علاوہ بین الاقوامی مالیاتی ادارہ اس سلسلے میں ڈھائی سو ارب یورو کی مدد فراہم کرے گا۔

یورپ کے اقتصادی امور کے کمشنر اولی رین کا کہنا ہے کہ یہ معاہدہ اس بات کا ثبوت ہے کہ ’ہم ہر ممکن طریقے سے یورو کا دفاع کریں گے‘۔

اگر یہ اقدامات نہ کیے جاتے تو خطرہ تھا کہ عالمی بازار میں یورو کو شدید دباؤ کا سامنا ہو سکتا ہے اور ان اقدامات کے بعد مشرقِ بعید میں یورو کی قدر میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔ اس سے قبل جمعہ کو یورو زون کے رہنماؤں نے یونان کے لیے ایک سو دس ارب یورو کے پیکج کی منظوری دی تھی اور اس پیکج کو یورپی یونین اور آئی ایم ایف کی حمایت بھی حاصل ہے۔

Image caption ان اقدامات کے بعد مشرقِ بعید میں یورو کی قدر میں اضافہ دیکھا گیا ہے

یورو پر عالمی اعتماد کی بحالی کے لیے لائے جانے والے پیکج کا اعلان سپین کی وزیرِ خزانہ الیناسلگاڈو نے پیر کی صبح گیارہ گھنٹے جاری رہنے والے مذاکرات کے بعد کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ امدادی منصوبے کے تحت ’یورپی کمیشن مشکلات کا شکار ممالک کے لیے ساٹھ ارب یورو فراہم کرے گا‘۔ انہوں نے بتایا کہ اس کے علاوہ یورو زون میں شامل ممالک کے لیے ’یورپین فنانشل سٹیبلائزیشن میکینزم‘ کے تحت چار سو چالیس ارب روپے میسر ہوں گے۔

اس کے علاوہ آئی ایم ایف بھی اس میکینزم کے لیے ڈھائی سو ارب یورو فراہم کرے گی۔

ہسپانوی وزیرِ خزانہ نے کہا کہ ’اس فیصلے سے عیاں ہے کہ ہم یورپ کے استحکام کے لیے ایک قابلِ ذکر رقم رکھ رہے ہیں‘۔

خیال رہے کہ یورپی مرکزی بینک نے بھی اعلان کیا ہے کہ وہ یورو زون میں شامل حکومتوں کے اور نجی قرضے خریدے گا تاکہ اس امر کو یقینی بنایا جا سکے کہ ’ معیشت کے ان حصوں کی مضبوطی اور لیکوئڈٹی کو یقینی بنایا جا سکے جو صحیح طریقے سے کام نہیں کر رہے‘۔

اسی بارے میں