عراق: دھماکے میں دس افراد ہلاک

شمالی عراق میں پولیس کا کہنا ہے کہ فٹبال میچ کے دوران ایک مشتبہ کار خودکش حملے میں کم از دس افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

فائل فوٹو
Image caption کچھ اطلاعات کے مطابق دو خودکش حملے ہوئے ہیں

پولیس کا کہنا ہے کہ بغداد سے تقریباً تین سو اسی کلومیٹر کے فاصلے پر واقع تل افار نامی قصبے میں ہونے والے اس بم دھماکے میں ایک سو پچیس کے قریب افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق بم سٹیڈیم کے داخلی دروازے پر اس وقت پھٹا جب وہاں لوگوں کی بڑی تعداد جمع تھی۔

فٹبال میچ دیکھنے والی ایک تماشائی حسین نشاد نے ہسپتال سے ٹیلی فون پر فرانسیسی خبر رساں ادارے ایے ایف پی کو بتایا کہ میچ دیکھنے کے لیے لوگوں کی ایک بڑی تعداد جمع تھی۔

انھوں نے بتایا کہ’ ایک زور دار دھماکے کی آواز سنی اور ان کے پیچھے کھڑے لوگوں کی وجہ سے وہ بم کے ٹکڑوں سے محفوظ رہے۔ اس کے بعد انھوں نے دوڑ لگا دی اور اسی دوران انھیں اللہ اکبر کی آواز سنائی اور اس کے بعد ایک اور دھماکہ ہو گیا۔‘

کچھ اطلاعات کے مطابق دو خودکش حملے ہوئے ہیں۔ پہلے ایک کار خودکش دھماکہ ہوا اور اس کے بعد خودکش جیکٹ پھٹنے سے دھماکہ ہوا۔

ابھی تک کسی گروپ نے دھماکے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔اس علاقے میں شیعہ مسلمان اکثریت میں ہیں جبکہ علاقے میں القاعدہ کے حامی سنی شدت پسند بھی سرگرم ہیں۔

اسی بارے میں