ڈاکیے کے گھر سے ہزاروں خطوط برآمد

امریکی ریاست فلاڈیلفیا میں ایک ڈاکیے کے گھر کے گیراج سے بیس ہزار ایسے خطوط برآمد ہوئے ہیں جو کبھی اپنی منزل پر پہنچ نہیں پائِے۔

فائل فوٹو،
Image caption ڈاک کی ترسیل میں تاخیر اور اسے چرانا دونوں ہی امریکی قانون میں جرم ہیں

ان خطوط میں سے زیادہ تر ایک دہائی سے بھی پرانے ہیں۔

غیر تقسیم شدہ ڈاک کا یہ ڈھیر اس وقت برآمد ہوا جب ڈیو نامی ایک ڈاکیا کئی دن تک نوکری سے غیر حاضر رہا تو امریکی محمکہ ڈاک کے اہلکاروں اس کے گھر خیریت دریافت کرنے گئے۔

امریکی کے وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی کے مطابق انیس سو ستانوے سے لے کر اب تک کے ان خطوط کو لے جانے کے لیے تین گاڑیاں استعمال کی گئیں۔

اس ڈاک میں بڑی تعداد میں چیکس، بلز اور دفتری خطوط شامل ہیں۔ پولیس تاحال ڈاکیے کی تلاش کر رہی ہے تاکہ اس حوالے سے پوچھ گچھ کی جا سکے۔

ڈاک کی ترسیل میں تاخیر اور اسے چرانا دونوں ہی امریکی قانون میں جرم ہیں۔

علاقے کے ایک رہائشی نے امریکی ٹی وی چینل اے بی سی نیوز کو بتایا کہ انھیں دو ہزار سات میں ارسال کی گئی ڈاک اب جا کے ملی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ملنے والی ڈاک میں پے چیک تھا جس کا انھیں شدت سے انتظار تھا۔

انھوں نے بتایا کہ اس کے بارے میں انھوں نے ڈیو یعنی ڈاکیے سے متعدد بار دریافت کیا لیکن اس کا کہنا تھا کہ ڈاک ابھی نہیں ملی اور جب ملے گئی وہ اس کے بارے میں انھیں آگاہ کر دیں گے۔

اسی بارے میں