امریکہ: ایک ہفتہ قبل ہی مبارکباد کا پیغام

امریکہ کی وزارت خارجہ کو اس وقت شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا جب انھوں نے غلطی سے ملکہ برطانیہ کو ان کوسالگرہ کی مبارکباد کا پیغام ایک ہفتہ قبل ہی بھیج دیا۔

فائل فوٹو، ہیلری
Image caption کوئی غیر قانونی حرکت نہیں کی گئی، اور یہ ایک خالص غلطی تھی: برمنگھم پیلس

وزارتِ خارجہ کے ترجمان پی جے کرولئی نے غلطی کو تسلیم کرتے ہوئے کہا کہ’ ایک ہفتہ تاخیر سے ایک ہفتہ پہلے بہتر ہے۔‘

مبارکباد کا یہ پیغام امریکی وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن کی جانب سے صدر براک اوباما کے حوالے سے بھیجا گیا تھا۔ اس پیغام میں صدر اوباما نے دونوں ممالک کے درمیان خصوصی تعلقات کو باعث عزت قرار دیا ہے۔

برمنگھم پیلس کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ’ کوئی غیر قانونی حرکت نہیں کی گئی، اور یہ ایک خالص غلطی تھی۔‘

پیغام میں ہیلری کلنٹن نے کہا ہے کہ ’ سالگرہ کے تقریبات کے موقع پر ہم ملکہ کی زندگی، میراث اور دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو باعثِ عزت قرار دیتے ہیں۔

Image caption سرکاری طور پر ملکہ برطانیہ کی سالگرہ بارہ جون کو منائی جائے گی

مبارکباد کے پیغام میں بیان کیا گیا ہے کہ کس طرح’ جوان شہزادی ایلزبتھ نے جنگ کے دنوں میں اپنی قوم کی مدد کی اور سالمیت کا روشن مینار بن گئیں۔‘

بیان میں مزید کہا گیا کہ ’ امریکہ ملکہ برطانیہ کی دوستی کا شکر گزار ہے، ایک بار پھر میں ملکہ کو سالگرہ کی مبارکباد دیتی ہوں اور آنے والے سال میں برطانیہ کی عوام کے لیے امن اور خوشحالی کی خواہش ہے۔‘

ملکہ برطانیہ کی سالگرہ کا اصل دن اکیس مئی ہے لیکن سرکاری طور پر ملکہ کی سالگرہ جون میں کسی بھی سنیچر کو منائی جاتی ہے اور تاریخ کا تعین حکومت کرتی ہے۔ اس سال ان کی (چوراسیویں) سالگرہ بارہ جون کو منائی جانی ہے اور اس دن فوج کی رنگا رنگ پریڈ منعقد ہو گی۔