’غیر اخلاقی حرکات پر دو سو جوڑے گرفتار‘

سری لنکا کے دو شہروں میں پولیس نے عوامی مقامات پر غیر اخلاقی حرکات کرنے کے الزام میں دو سو کے قریب نوجوان جوڑوں کو گرفتار کیا ہے۔

فائل فوٹو،
Image caption پولیس نے نوجوان جوڑوں کو واننگ دے کر چھوڑ دیا ہے

دونوں شہروں کے مقامی افراد نے شکایت کی تھی کہ نوجوان جوڑے عوامی مقامات پر بوس و کنار کرتے ہیں اور ایک دوسرے سے گلے لگتے ہیں۔

سری لنکن شہر کرُونگلیلا میں پولیس نے گزشتہ دو ہفتوں کے دوران تین سو پچاس کے قریب نوجوانوں کو گرفتار کیا اور ان کی سرزنش کی۔

اِن جوڑوں میں کچھ لڑکیوں کی عمریں محض پندرہ سال کے لگ بھگ تھیں۔

اس کے بعد پولیس نے ایک دوسرے شہر متارا میں غیر اخلاقی حرکات کے الزام میں بائیس جوڑوں کو گرفتار کیا ہے لیکن بعد میں ضمانت پر رہا کر دیا۔ ان ان جوڑوں کو جمعہ کو مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا جائے گا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ سینکڑوں نوجوان جوڑوں کی غیر اخلاقی حرکات کی وجہ سے کرؤنگیلا کے عام شہریوں کو پریشانی اور شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا رہا تھا۔

یہ شہر طالب علموں کا ایک بڑا مرکز ہے اور اطلاعات کے مطابق ان میں سے بیشتر شہر کے بس سٹینڈز اور دیگر عوامی مقامات پر اکٹھے بیٹھتے ہیں۔

سری لنکا میں بی بی سی کے نامہ نگار چارلس ہاوی لینڈ کا کہنا ہے کہ اگرچہ دارالحکومت میں لوگ مغربی انداز اپنا رہے ہیں لیکن دیگر چھوٹے شہروں میں عوامی مقامات پر بوس و کنار اور گلے لگنا کو بری نظر سے دیکھا جاتا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ انہی وجوہات کی بنا پر انہوں نے تین سو پچاس نوجوان جوڑوں کو گرفتار کیا تھا۔ بعد میں ان جوڑوں کو وراننگ دے کر والدین کے حوالے کر دیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اگر ان جوڑوں نے دوبارہ ایسی حرکت کی تو ان کے ساتھ زیادہ سختی سے نمٹا جائے گا۔

اسی بارے میں