’محاصرہ ہر صورت میں ختم ہونا چاہیے‘

عرب دنیا کے سینئر ترین سفارتکار امر موسٰی کا کہنا ہے کہ غزہ کا محاصرہ ہر صورت میں ختم ہونا چاہیے۔

فائل فوٹو
Image caption اسرائیل نے دو ہزار سات سے غزہ کا محاصرہ کر رکھا ہے

عرب لیگ کے سربراہ نے یہ بات فلسطینی علاقے کے اپنے پہلے دورے کے آغاز پر کہی ہے۔

انہوں نے مصر میں رفاہ کراسنگ سے غزہ میں داخل ہونے کے بعد وہاں موجود فلسطینی رہنماؤں سے ملاقات کے بعد کہا کہ ’یہ محاصرہ جس کا مقابلہ کرنے کے لیے ہم سب یہاں ہیں، ہر صورت میں ختم ہونا چاہیے اور اس معاملے پر عرب لیگ کا موقف واضح ہے‘۔

خیال رہے کہ مصر اور اسرائیل نے سنہ 2007 میں غزہ میں حماس کے برسرِ اقتدار آنے کے بعد سے علاقے کا محاصرہ سخت کر دیا تھا اور حال ہی میں غزہ کے محصور عوام تک امداد پہنچانے کی کوشش کرنے والے بحری جہاز پر اسرائیلی حملے کے نتیجے میں نو افراد مارے گئے تھے۔

تاہم اس اسرائیلی کارروائی کے بعد مصر نے رفاہ کراسنگ کھول دی تھی اور اجازت ناموں کے حامل افراد کو سرحد پار کرنے کی اجازت دی گئی تھی۔ مصر کا کہنا ہے کہ رفاہ کراسنگ اب غیر معینہ مدت کے لیے کھلی رہے گی۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ امر موسٰی کا دورۂ غزہ اس خطے کے حوالے سے عرب دنیا کے موقف میں تبدیلی کا غماز ہے۔

اسی بارے میں