امریکہ پر انحصار نہ کریں: یورپ کو امریکہ کا مشورہ

امریکی وزیر خزانہ ٹموتھی گیتھنر نے کہا ہے کہ دنیا امریکہ پر اب اتنا انحصار نہیں کرسکتی جتنا کہ ماضی میں کیا جاتا تھا۔ امریکی وزیر خزانہ نے یورپی ممالک کو بھی مشورہ دیا کہ وہ ترقی اور اخراجات کم کرنے پر توجہ دیں۔

انہوں نے کہا کہ دنیا کے سربراہان کے لیے ترقی اور قومی خسارے میں کمی پر توجہ دینا بہت اہم ہے۔

یہ بات انہوں نے واشنگٹن میں بی بی سی سے ایک انٹرویو میں کہی۔ یاد رہے کہ سنیچر سے کینیڈا کے شہر ٹورنٹو میں جی ایٹ اور جی ٹوئنٹی اجلاس شروع ہو رہے ہیں۔

عالمی معاشی بحران کے بعد ہونے والا یہ ان تنظیموں کے پہلے اجلاس ہیں۔

تاہم ان کا کہنا تھا کہ امریکہ اور یورپ ایک ہی مقصد کو حاصل کرنے کے لیے مختلف راستے اور مختلف رفتاریں اپنائیں گے۔’ہمیں مختلف طریقے اپنانے ہوں گے کیونکہ ہماری کمزوریاں اور مثبت پہلو مختلف ہیں۔‘

ان کا کہنا تھا کہ امریکہ اس پوزیشن میں نہیں ہے کہ وہ یورپی ممالک کے لیے بہترین طریقے وضع کر سکے۔

گیتھنر نے مزید کہا کہ امریکہ نے ماضی خسارہ کم کرنے کے لیے پرعزم منصوبہ تیار کیا تھا کیونکہ امریکہ اپنا خسارہ کم کرنے کے حوالے سے دیگر ممالک سے بہتر پوزیشن میں تھا۔

گیتھنر سے جب یہ پوچھا گیا کہ یورپ کو بھی جاپان جیسے معاشی جمود کا سامنا ہوگا اگر وہ قرضوں میں کمی کی پالیسی جاری رکھے، تو ان کا کہنا تھا کہ یورپ میں اس سے بچنے کی صلاحیت ہے۔

’یورپ کے پاس آپشن ہے کہ وہ ایسی اصلاحات اور پالیسیاں بنائے جس سے ترقی میں تیزی آ سکے۔ ٹورنٹو میں ہونے والے اجلاس میں ہمیں موقع ملے گا کہ ہم بیٹھ کر اس پر غور کر سکیں کہ آیا ہمارے پاس وسیع حکمت عملی موجود ہے جس سے ہماری معیشت کی بحالی میں تیزی آ سکے۔‘

امریکی صدر براک اوباما نے جی ٹوئنٹی میں شامل ممالک کو پچھلے ہفتے ایک خط میں متنبہ کیا تھا کہ قومی خسارے کو بہت جلدی ختم کرنے کی کوشش نہ کی جائے۔ امریکہ صدر کا خیال ہے کہ اس سے معاشی بحالی متاثر ہو گی۔

گیتھنر کا کہنا ہے کہ یورپ اور امریکہ میں اختلافات سے زیادہ مماثلتیں ہیں۔

اسی بارے میں