افغانستان میں تین برطانوی فوجی ہلاک

فائل فوٹو
Image caption برطانوی فوجیوں کی ہلاکت پر تشویش پائی جاتی ہے

افغانستان کے صدر حامد کرزئی نے ایک افغان فوجی کے ہاتھوں بین الاقوامی سکیو رٹی فورسسز کے تین افراد کی ہلاکت پر برطانوی حکومت سے دلی معذرت کی ہے۔

برطانیہ میں وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ اُ سے علم ہے کہ یہ واقعہ ہلمند صوبے میں رونما ہوا۔ انھوں نے کہا کہ اس بارے میں تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ برطانوی وزرات دفاع نے مزید تفصیل بنانے سے گریز کیا ہے۔

بی بی سی کے نامہ نگاروں کے مطابق ایسے واقعات سے اس تشویش میں اضافہ ہورہا ہے کہ آيا افغان خود اپنی سکیورٹی کے اہل ہیں یا نہیں۔

نامہ نگاروں کے مطابق جب تک متاثرین کے اہل خانہ کو ان ہلاکتوں کے متعلق بتا نہیں دیا جاتا، اس وقت تک اس واقعے کی نوعیت اور تفصیل کا پتہ نہیں چل سکےگا۔

دفاعی امور سے متعلق بی بی سی کے نامہ نگار کرولائن وائٹ کے مطابق اس واقعے میں ہلاک ہونے والے تینوں برطانوی فوجی ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ تینوں فوجیوں کو ایک افغان فوجی نے دانستہ طور پرگولی مار کر ہلاک کر دیا ہے۔

اس واقعے کی خبر خود صدر حامد کرزائی نے ایک پریس کانفرنس کے دوران بتا ئی۔

اسی بارے میں