افغانستان: چوبیس گھنٹوں میں بارہ فوجی ہلاک

فائل فوٹو
Image caption جون کا مہینہ نیٹو فوجیوں کی ہلاکتوں کے تعداد کی وجہ سے عالمی امن فوج کے لیے بدترین مہینہ ثابت ہوا ہے

افغانستان میں پانچ مزید امریکی فوجی ہلاک ہوگئے ہیں اور گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں افغانستان میں نیٹو کے ہلاک شدگان فوجیوں کی تعداد بارہ تک پہنچ گئی ہے۔

نیٹو نے کہا ہے کہ جنوبی افغانستان میں بین الاقوامی امن فوج کے چار فوجی بم پھٹنے سے ہلاک ہوئے۔ ایک علیحدہ واقعہ میں ایک امریکی فوج افغانستان کے جنوب میں مارا گیا۔

یہ واقعہ قندھار میں ایک بم دھماکے میں تین امریکی فوجیوں اور پانچ افغان شہریوں کی ہلاکت کے بعد پیش آیا ہے۔

تازہ ترین ہلاکتیں ایسے موقع پر ہوئی ہیں جب ہلمند کے صوبے میں اس افغان بھگوڑے فوجی کی تلاش کے لیے بڑی کارروائی جاری ہے جس نے رائل گرکھا رائفلز کے تین برطانوی فوجیوں کو گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا۔

منگل کو ایک برطانوی میرین بھی ہلمند ہی کے صوبے میں ہلاک ہو گیا تھا۔

جولائی میں اب تک بین الاقوامی فوج کے پینتالیس فوجی افغانستان میں مارے جا چکے ہیں جن میں سے تینتس کا تعلق امریکہ سے ہے۔ جون میں بین الاقوامی فوج کے ایک سو سے زیادہ فوجی مارے گئے تھے۔

اسی بارے میں