لبنان: ’فتح الاسلام تنظیم کے رہنما ہلاک‘

عبد الرحمن عوض
Image caption عبد الرحمن عوض سنی عکسریت پسند تنظیم فتح الاسلام کے رہنما تھے

لبنان میں سکیورٹی اہلکاروں کا کہنا ہے کہ سُنی عسکریت پسند تنظیم ’فتح الاسلام‘ کے مطلوب رہنما عبد الرحمن عوض کو ہلاک کر دیا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق عبد الرحمن عوض اور ان کے دو ساتھیوں کو سکیورٹی اہلکاروں نے مشرقی لبنان میں روکا تھا جس کے بعد فائرنگ کے تبادلے میں عبد الرحمن عوض اور ان کے ایک ساتھی (ابو بکر عبداللہ) ہلاک ہوگئے جبکہ تیسرا شخص وہاں سے فرار ہو گیا۔

فتح الاسلام نے سنہ 2007 میں لبنانی فوج کے خلاف تین ماہ تک لڑhئی جاری رکھی تھی۔ خیال ہے کہ اس تنظیم کےالقاعدہ کے ساتھ روابط ہیں اور اس کے رہنما عبد الرحمن عوض لبنان کے انتہائی مطلوب افراد میں سر فہرست تھے۔ ان کو غیر حاضری میں پچھلے تین برس میں ہونے والے کئی بم حملوں اور ہلاکتوں کے سلسلے میں موت کی سزا سنائی جا چکی تھی۔

خیال ہے کہ عبد الرحمن عوض نے سنہ 2007 میں فتح الاسلام کی قیادت سنبالی تھی۔ لبنان میں سکیورٹی ذرائع کے مطابق وہ حال میں ملک کے جنوب میں واقع ’عین الحلوہ‘ نامی فلسطینیوں کے کیمپ میں چھپے ہوئے تھے۔

فتح الاسلام کو لبنان کے پولیس اور فوجی اہلکاروں اور اقوام متحدہ کےعملے پر قتالانہ حملوں کا ذمہ دار سمجھا جاتا ہے۔

اسی بارے میں