اسرائیل: ترک سفارت خانے سےگرفتاری

فائل فوٹو
Image caption اس شخص کو چار سال پہلے اسی قسم کے ایک واقعے میں برطانوی سفارت خانے سے اسے گرفتار کیا گیا تھا

اسرائیل کے شہر تل ابیب میں ترکی کے سفارت خانے میں داخل ہونے کے بعد دو افراد کو یرغمال بنانے والے ایک شخص کو زخمی حالت میں ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

اسرائیلی حکام کے مطابق یہ ایک فلسطینی تھا جس نے ترکی کے سفارت خانے میں داخل ہونے کے بعد دو افراد کو یرغمال بنا لیا تھا تاہم اس نے تھوڑی دیر بعد دونوں افراد کو رہا کر دیا۔

شخص ایک چاقو ، کھلونا بندوق اور پٹرول سے بھرے ایک ڈبے کے ساتھ سفارت خانے میں داخل ہوا تھا۔

اسرائیلی حکام کے مطابق یہ شخص ترکی کے سفارت خانے میں تعینات سکیورٹی گارڈز کی فائرنگ سے زخمی ہو گیا تھا جسے بعد میں ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

ترکی کے وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ سفارت خانے میں صورتحال اب مکمل طور پر قابو میں ہے۔

اطلاعات کے مطابق ندیم انجاز نامی یہ شخص ترکی سے پناہ کا مطالبہ کر رہا تھا۔ ترکی کے وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ ’یہ شخص سفارت خانے میں پناہ لینے آیا تھا اور اس کے پاس اسلحہ کی موجودگی کی اطلاع تھی۔‘

’یہ اچھی صحت میں ہے، یہ کہہ رہا تھا کہ اسے پناہ چاہیے لیکن ہم تمام واقعے کا جائزہ لے رہے تھے، اس ضمن میں تحقیقات کی جا رہی ہیں لیکن پریشانی کی کوئی بات نہیں ہے۔‘

اسرائیلی حکام کا کہنا ہے کہ اس شخص کا تعلق غرب اردن سے ہے اور اسے حال ہی میں جیل سے رہا کیا گیا تھا۔ چار سال پہلے اسی قسم کے ایک واقعے میں برطانوی سفارت خانے سے اسے گرفتار کیا گیا تھا

اسی بارے میں