آئرلینڈ کے لیے یورپی قرضہ: ہونوہون

Image caption مسٹر ہونوہون نے کہا ہے کہ انہیں امید ہے کہ یہ قرضہ دسیوں ارب یورو کا ہوگا

آئرش مرکزی بینک کے گورنر پیٹرک ہونوہون نے امید ظاہر کی ہے کہ جمہوریہ آئرلینڈ مالیاتی نظام کو مشکلات سے نکالنے کے لیے یورپی یونین سے قرضہ لے گا۔

مسٹر ہونوہون نے کہا ہے کہ انہیں امید ہے کہ یہ قرضہ دسیوں ارب یورو کا ہو گا۔

’یہ ایک بہت بڑا قرضہ ہو گا کیونکہ قرضے کی رقم اور قرضے کے لیے دستیاب رقم سے یہ دکھانا مقصود ہے کہ آئرلینڈ کے پاس مارکیٹ کی تشویش کو رفع کرنے کے لیے کافی ’بارود‘ موجود ہے۔‘

اس بارے میں حتمی فیصلہ آئرش حکومت کرے گی جس نے ابھی تک ان اطلاعات پر تبصرہ نہیں کیا ہے۔

مسٹر ہونوہون کا بیان ایک ایسے موقع پر آیا ہے جب بین الاقوامی ماہرین کا ایک اجلاس ڈبلن میں ہو رہا ہے جس میں جمہوریہ آئرلینڈ کے قرضوں کے بحران پر بات چیت کی جائے گی۔

بین الاقوامی مالیاتی فنڈ، یورپی مرکزی بینک اور یورپی یونین کے نمائندے آئرش حکومت سے بھی ملاقات کر رہے ہیں جس نے اس بات کی تردید کی ہے کہ اس نے بین الاقوامی اداروں کو امداد کے لیے کہا ہے۔

بی بی سی بزنس ایڈیٹر رابرٹ پیسٹن کا کہنا ہے کہ اس بیان کے بعد یہ کہا جا سکتا ہے کہ آئرلینڈ نے امداد حاصل کرنے کے خلاف مزاحمت کو ترک کر دیا ہے۔

’یہ خیال کرنا ناممکن ہے کہ آئرش حکومت اپنے (یورپی) پارٹنرز اور اپنے مرکزی بینک کے مشورے کو نظر انداز کرے گی۔‘

رابرٹ پیسٹن کے مطابق اگر اس نے ایسا کیا تو آئرش بینکوں کے کمرشل صارفین رقوم نکلوانا شروع کر دیں گے جس کے نتائج تباہ کن ہوں گے۔

اسی بارے میں