مصر میں عام انتخابات میں ووٹنگ جاری

مصر میں انتخابی مہم کےدوران کی ایک فوٹو
Image caption امید کی جارہی ہے کہ حکمراں جماعت کو بھاری اکثریت حاصل ہوگی

مصر میں پارلیمانی انتخابات کے لیے ووٹنگ جاری ہے۔ اس سے قبل انتخابی مہم کے دوران حزب اختلاف کی جماعت ’مسلم برادرہڈ‘ اور سیکورٹی فورسز کے درمیان پرتشدد جھڑپیں ہوئی تھیں۔

امید کی جارہی ہے کہ ان انتخاتات میں صدر حسنی مبارک کی حکمراں جماعت این ڈی پی کو باآسانی کامیابی حاصل ہو جائےگی۔

ان انتخابات کے بعد یہ بھی صاف ہوجائے گا کہ حزب اختلاف کی جماعت مسلم برادرہڈ اپنا وجود بچا پاتی ہے یا نہیں۔

ان انتخابات میں تقریباً ساڑھے چار کروڑ افراد اپنے حق رائے دہی استعمال کریں گے اور ان انتخابات کے نتائج آنے میں کئی دن کا وقت لگ سکتا ہے۔

قاہراہ میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار جان لائنکا کہنا ہے کہ جس طرح سے یہ انتخابات ہورہے ہیں اس پر تنقید ہورہی ہے۔

جان لائن کا کہنا ہے کہ بعض شہروں میں وہاں کی عدالت نے انتخابات ملتوی کرنے کا حکم دیا ہے کیونکہ حزب اختلاف کی جماعتوں کے امیدواروں کے نام مبینہ طور پر ووٹنگ لسٹ میں شامل نہیں کیے گئے۔

سرکاری طور پر مسلم برادرہڈ پارٹی پر پابندی عائد ہے لیکن اس پارٹی کے حمایتی آزاد امیدوار کے طور پر انتخابات میں حصہ لیتے ہیں۔

مسلم برادرہڈ پارٹی سرکار پر الزام عائد کرتی رہی ہے کہ وہ اسے دھمکاتی ہے جس کے سبب اسے اپنی کئی سیٹیں گنوانی پڑی ہیں۔

بعض ماہرین کا کہنا ہے کہ ان انتخابات میں حکمراں جماعت کو انتی بھاری جیت حاصل ہوسکتی ہے کہ ان انتحابات کے شفاف ہونے پر سوال کھڑے ہوسکتے ہیں۔

اسی بارے میں