’یہ امریکہ پر ہی نہیں پوری دنیا پر حملہ ہے‘

ہلیری کلنٹن
Image caption جن لوگوں نے یہ معلومات چوری کی ہیں امریکہ ان کے خلاف جارحانہ اقدامات کر رہا ہے: ہیلری

امریکہ کی وزیر خارجہ ہلیری کلنٹن نے امریکی سفارت کاروں کے لاکھوں کی تعداد میں خفیہ پیغامات کے منظر عام پر لائے جانے کو نہ صرف امریکہ بلکہ بین الاقوامی برادری پر حملہ قرار دیا ہے۔

ہلیری کلنٹن نے کہا کہ ہر ملک کو اس قابل ہونا چاہیے کہ وہ دوسرے ممالک کے ساتھ مشترکہ معاملات پر ایمان دارانہ اور خفیہ گفتگو کر سکے۔

انھوں نے کہا کہ’ امریکہ سمیت ہر ملک کو لازمی طور پر اس قابل ہونا چاہیے کہ جن قوموں اور لوگوں کے ساتھ وہ کام کرتے ہیں کہ بارے میں بے تکلف گفتگو کر سکیں، اور امریکہ سمیت ہر ملک کو لازمی طور پر اس قابل ہونا چاہیے کہ وہ دوسرے ممالک کے ساتھ مشترکہ تحفظات پر ایمانداری کے ساتھ نجی بات چیت کر سکے۔‘

ہیلری کلنٹن نے کہا کہ ’ خفیہ پیغامات کا منظر عام پر لانا نہ صرف امریکہ کی خارجہ پالیسی کے مفادات پر حملہ ہے بلکہ یہ بین الاقوامی برادری، اتحادیوں اور شراکت داریوں، گفتگو اور مذاکرات جو عالمی سکیورٹی اور معاشی کامیابی کی حفاظت کرتے ہیں پر حملہ ہے۔‘

انہوں نے کہا کہ انہیں اعتماد ہے کہ دوسرے ممالک کے ساتھ امریکہ کی شراکت داری جس کے لیے اوباما انتظامیہ نے بڑی محنت کی ہے اس چیلنچ سے نمٹ سکے گی۔

ہلیری کلنٹن کے مطابق جن لوگوں نے یہ معلومات چوری کی ہیں امریکہ ان کے خلاف جارحانہ اقدامات کر رہا ہے۔

ہیلری کلنٹن کے مطابق سفارت کاروں کے کام کا نہ صرف امریکہ بلکہ دنیا میں اربوں لوگوں کو فائدہ ہوتا ہے۔

اسی بارے میں