افغانستان: بم دھماکے میں چودہ مسافر ہلاک

فائل فوٹو
Image caption ہلاک ہونے والے افراد کا تعلق ایک ہی خاندان سے بتایا جاتا ہے

افغانستان میں حکام کے مطابق مغربی صوبے ہرات میں ایک منی بس کے سڑک کے کنارے نصب بم سے ٹکرانے کے نتیجے میں چودہ مسافر ہلاک ہو گئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق منی بس میں سوار افراد شادی کی ایک تقریب میں جا رہے تھے۔

ہرات میں گورنر کے ترجمان نے رفعی بہروزن نے بی بی سی کو بتایا کہ ضلع کشک کونا میں سڑک کے کنارے نصب بم سے منی بس ٹکرا گئی جس کے نتیجے میں چودہ مسافر ہلاک ہو گئے۔

ہلاک ہونے والے افراد کا تعلق ایک ہی خاندان سے تھا۔ اس واقعے میں کم از کم چار مسافر زخمی بھی ہوئے ہیں۔

گورنر کے ترجمان نے بتایا کہ سکیورٹی فورسز کے اہلکار واقعے میں زخمی ہونے والے افراد کو ہسپتال منتقل کر رہے ہیں۔

ہرات میں سکیورٹی فورسز نے بی بی سی کو بتایا کہ بم دھماکے کا واقعہ ہرات شہر سے ضلع کشک کونا جانے والے ایک مصروف سڑک پر پیش آیا۔ انھوں نے بتایا کہ علاقے میں دیگر دو بموں کو ناکارہ بنا دیا گیا ہے۔

دریں اثنا افغان حکام کے مطابق صوبہ ہلمند میں نیٹو کے ایک فضائی حملے میں غلطی سے چار افغان فوجی ہلاک ہو گئے ہیں۔

افغانستان میں تعینات بین الاقوامی اتحادی افواج یعنی ایساف نے کہا ہے کہ وہ ہلمند میں پیش آنے والے واقعے کا جائزہ لے رہے ہیں۔

ایساف کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ’ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب افغان اور ایساف افواج کے مشترکہ گشت کے دوران مزاحمت کاروں نے چھوٹے ہتھیاروں سے حملہ کر دیا، حملے کے بعد گشتی ٹیم نے فضائی مدد طلب کی اور اتحادی افواج کے طیارے نے مزاحمت کاروں کی فائرنگ پوزیشن کی اچھی طرح شناخت کرنے کے بعد ان پر فضائی حملہ کیا۔‘

خیال رہے کہ افغانستان میں سب سے زیادہ پرتشدد علاقوں میں سے ایک صوبہ ہلمند ہے جہاں نیٹو افواج طالبان باغیوں کے ساتھ جنگ میں مصروف ہے۔

اس صوبے میں اس سے پہلے بھی فرینڈلی فائر کے واقعات پیش آ چکے ہیں۔

اسی بارے میں