امدادی فنڈ، چالیس ملین کا برطانوی عطیہ

Image caption دنیا میں قدرتی آفات سے متاثرین کی تعداد بڑھنے کا خدشہ ہے

برطانیہ نے قدرتی آفات سے نمٹنے کے لیے بنائے جانے والے اقوامِ متحدہ کے فنڈ کے لیے چالیس ملین پونڈ عطیہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

رواں برس دنیا بھر میں دو سو ساٹھ ملین افراد قدرتی آفات سے متاثر ہوئے ہیں اور برطانوی عطیے سے اس فنڈ کے لیے مختص رقم میں کمی کو چھیاسٹھ فیصد تک پورا کیا جا سکے گا۔

برطانیہ کے بین الاقوامی ترقی کے وزیر اینڈریو مچل نے قدرتی آفات سے نمٹنے کے زیادہ مربوط کوششوں پر بھی زور دیا ہے۔

رواں برس پاکستان میں آنے والے سیلاب اور ہیٹی میں آنے والے زلزلے کے بعد عالمی امداد کی فراہمی میں تاخیر ہوئی تھی۔

اینڈریو مچل کے مطابق اقوامِ متحدہ کے ہنگامی امداد کے فنڈ کی ’حمایت میں کمی‘ سے مستقبل میں آنے والی آفات سے نمٹنے کے لیے اس کی صلاحیت متاثر ہونے کا خدشہ تھا۔

اس فنڈ کو سنہ 2010 میں کئی چھوٹے پیمانے پر آنے والے آفات سے نمٹنے کے لیے استعمال کیا گیا جن میں لیسوتھو میں خسرہ کا پھیلاؤ اور نائجیریا میں’لیڈ پوائزننگ‘ بھی شامل ہیں۔ یہ فنڈ چھ برس قبل چھبیس دسمبر کو آنے والے تباہ کن سونامی کے بعد قائم کیا گیا تھا۔

ایک اندازے کے مطابق سنہ 2015 تک ہر برس قدرتی آفات سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد تین سو پچھہتر ملین تک پہنچ جائے گی۔

اسی بارے میں