امریکہ: فائرنگ سے کانگریس رکن شدید زخمی

Image caption گیبریلا گیفورڈز پر فائرنگ کے بعد ایک شخص کو گرفتار کیا ہے

امریکی ریاست ایریزونا میں ایک شخص کی فائرنگ سے کانگریس کی خاتون رکن گیبریئل گیفرڈز سر پرگولی لگنے سے شدید زخمی اور چھ افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

سنیچر کو جنوبی ایریزونا کے علاقے ٹکسن میں ایک عوامی تقریب کے دوران سینکڑوں افراد کی موجودگی میں امریکی ایوان نمائندگان میں ڈیموکریٹ کی رکن گیبریئل گیفرڈز کو سر پر گولی مار دی گئی ہے۔

پولیس کے مطابق اس واقعے میں چھ افراد ہلاک اور گیبرئیل گیفرڈز زخمی ہو گئی ہیں۔ گیبرئیل گیفرڈز ہسپتال میں زیرعلاج ہیں اور ان کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے تاہم ڈاکٹر پرامید ہیں کہ صحت یاب ہو جائیں گی۔

ہلاک ہونے والوں میں ایک فیڈرل جج اور نو سالہ بچی شامل ہے۔

امریکی صدر براک اوباما نے اس واقعے کو پورے ملک کے لیے سانحہ قرار دیا ہے۔

اس سے پہلے وائٹ ہاوس سے صدر براک اوباما کے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس واقعے میں ڈیموکریٹ کی نمائندہ گیبریئل گیفرڈز ’شدید زخمی‘ ہو گئی ہیں۔

’ آج صبح ایک ناقابل بیان المیہ پیش آیا جب ایریزونا میں کانگریس کی رکن گیبریئل گیفرڈز کے ساتھ ایک میٹنگ کے دوران متعدد امریکی شہریوں کو گولی مار دی گئی۔‘

ایک ترجمان نے ٹی وی چینل اے بی سی نیوز سے بات کرتے ہوئے ان اطلاعات کی تردید کی ہے کہ اس واقعے میں گیبریئل گیفرڈز ہلاک ہو گئی ہیں۔

ترجمان کے مطابق گیبریئل گیفرڈز کی ہسپتال میں سرجری کی جا رہی ہے۔

پولیس نے فائرنگ کے بعد ایک مشتبہ شخص کو گرفتار کیا ہے۔ مقامی میڈیا کے مطابق گرفتار کیے جانے والے بائیس سالہ شخص کا تعلق ریاست ایریزونا سے ہی ہے۔

امریکی خبر رساں ادارے اے پی کے مطابق اس واقعے میں گیبریئل گیفرڈز کے ساتھی بھی ہلاک ہوئے ہیں۔

چالیس سالہ گیفرڈز کانگریس میں ریاست ایریزونا کے آٹھ اضلاع کی نمائندگی کرتی ہیں۔

مقامی ڈیموکریٹس کے چیئرمین جیف راجرز نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے واقعے کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے گیبریئل گیفرڈز کو ’ ایک حیران کن رکنِ کانگریس اور متاثر کن شخصیت قرار دیا ہے۔ ‘

انھوں نے مزید کہا کہ’ اب ہم سکولوں اور عوامی اہلکاروں پر قتل و غارت کے اس قسم کے واقعات کو جاری نہیں رکھ سکتے۔‘

اسی بارے میں