رکنِ کانگریس پر حملے کا مقدمہ درج

Image caption مسلح شخص نے گیبریئل گیفرڈز کے سر پر گولی ماری

امریکہ میں وفاقی حکام نے اس بائیس سالہ نوجوان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے جس نے ریاست ایریزونا میں ایک عوامی اجتماع کے دوران حکمران جماعت ڈیموکریٹک پارٹی کی منتخب رکن کانگریس گیبریئل گیفرڈز کو گولیاں مارکر شدید زخمی کر دیا تھا۔

ملزم جیئرڈ لاؤنر کو قتل اور اقدام قتل سمیت پانچ الزامات کا سامنا ہے اور انھیں پیر کو عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

اتوار کو امریکی ریاست ایریزونا میں فائرنگ سے کانگریس کی خاتون رکن گیبریئل گیفرڈز سر پرگولی لگنے سے شدید زخمی اور چھ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

گیبریئل گیفرڈز اس وقت ہسپتال میں زیر اعلاج ہیں اور ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ سرجری کے بعد بہتری کے آثار نظر آئے ہیں۔

ایریزونا یونیورسٹی میڈیکل سینٹر میں سرجنز کا کہنا ہے کہ گیبریئل گیفرڈز کی حالت اب بھی تشویشناک ہے تاہم انھیں حوصلہ ملا ہے کہ گولی گیفرڈز کے دماغ کے صرف ایک حصے میں لگی ہے۔

ڈاکٹروں کے مطابق سرجری کے بعد ابتدائی طور پر خون کے رساؤ کو روک لیا گیا ہے۔

شعبہ نیورولوجی کے سربراہ ڈاکٹر مائیکل لیمول کا کہنا ہے کہ ’ہمیں بہت حوصلہ ملا ہے۔ ہم اب بھی بہت مشکل میں ہیں، دماغ میں کسی وقت بھی سوزش ہو سکتی ہے جس سے صورتحال انتہائی خراب ہو سکتی ہے، لیکن وہ پرامید ہیں۔‘

انھوں نے ایک پریس کانفرس میں بتایا کہ فائرنگ کے واقعے میں زخمی ہونے والے گیارہ افراد کا اعلاج کیا ہے جب کہ پانچ مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔

سنیچر کو جنوبی ایریزونا کے علاقے ٹکسن میں ایک عوامی تقریب کے دوران سینکڑوں افراد کی موجودگی میں امریکی ایوان نمائندگان میں ڈیموکریٹ کی رکن گیبریئل گیفرڈز کو سر پر گولی مار دی گئی تھی۔

پولیس کے مطابق اس واقعے میں ایک فیڈرل جج اور نو سالہ بچی سمیت چھ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

امریکی صدر براک اوباما نے اس واقعے کو پورے ملک کے لیے سانحہ قرار دیا ہے۔

اس سے پہلے وائٹ ہاوس سے صدر براک اوباما کے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ’ آج صبح ایک ناقابل بیان المیہ پیش آیا جب ایریزونا میں کانگریس کی رکن گیبریئل گیفرڈز کے ساتھ ایک میٹنگ کے دوران متعدد امریکی شہریوں کو گولی مار دی گئی۔‘

امریکی خبر رساں ادارے اے پی کے مطابق اس واقعے میں گیبریئل گیفرڈز کے ساتھی بھی ہلاک ہوئے ہیں۔

چالیس سالہ گیفرڈز کانگریس میں ریاست ایریزونا کے آٹھ اضلاع کی نمائندگی کرتی ہیں۔

مقامی ڈیموکریٹس کے چیئرمین جیف راجرز نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے واقعے کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے گیبریئل گیفرڈز کو ’ ایک حیران کن رکنِ کانگریس اور متاثر کن شخصیت قرار دیا ہے۔ ‘

انھوں نے مزید کہا کہ’ اب ہم سکولوں اور عوامی اہلکاروں پر قتل و غارت کے اس قسم کے واقعات کو جاری نہیں رکھ سکتے۔‘

اسی بارے میں