چین کسی کے لیے خطرہ نہیں:لیانگ

گیٹس اور لیانگ
Image caption ’ہم ایک مضبوط فوجی تعاون پر اتفاق کرتے ہیں‘

چینی وزیرِ دفاع لیان گوانگلی کا کہنا ہے کہ ان کا ملک کسی دوسرے ملک کے لیے خطرہ نہیں ہے۔

چین کے دورے پر آنے والے امریکی وزیرِ دفاع رابرٹ گیٹس کے ساتھ ملاقات کے بعد لیان گوانگلی کا کہنا تھا کہ چین جدید ٹیکنالوجی کے حامل دوسرے ممالک سے کہیں پیچھے ہے۔

خبر رساں ایجنسی رائٹرز میں چینی وزیرِ دفاع کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ ’اسلحہ کی تحقیق اور ڈویلپمنٹ کے نظام پر ہم جو محنت کرتے ہیں اس کا نشانہ قطعی کوئی تیسرا ملک نہیں ہے‘۔

رابرٹ گیٹس چین کے چار روزہ دورے پر ہیں تاکہ اگلے ہفتے چینی صدر ہو جنتاؤ کے امریکی دورے سے پہلے دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی کو کم کر سکیں۔

چین امریکہ کی جانب سے تائیوان کو اسلحہ کی فروخت اور جاپان اور جنوبی کوریا کے ساتھ ہونے والے امریکی معاہدوں سے ناراض ہے۔

لیانگ گوانگلی اور رابرٹ گیٹس نے مذاکرات کے بعد نامہ نگاروں کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایک مضبوط فوجی تعاون پر اتفاق کرتے ہیں جو جاری رہنا چاہیے اور سیاست کا اس پر کوئی اثر نہیں پڑنا چاہیے۔

چین کے فوجی ارادوں کے بارے میں امریکہ کو تسلی دینے سے قبل چینی وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ بیجنگ کو تائیوان کے ساتھ امریکی رویے پر ہمیشہ سے تشویش ہے۔

اسی بارے میں