امریکہ: کئی علاقوں میں شدید برفباری

امریکہ کی شمال مشرق میں نیویارک سمیت کئی مقامات پر ایک بار پھر شدید برفباری ہوئي ہے اور کئی علاقوں میں زندگی کے معمولات درہم برہم ہوکر رہ گۓ ہیں۔ ہوائی اڈے اور سڑکیں بند ہیں اور شہری سہولتوں کے اداروں نے برفانی طوفان سے نمٹنے کے لیے ہنگامی حالت کا اعلان کر دیا ہے۔

نیویارک میں دو ہفتوں میں یہ دوسرا برفانی طوفان ہے۔

نیویارک میں برفانی طوفان، تصاویر

امریکہ کے مشرقی ساحل میں یہ طوفان محمکہ موسمیات کی پیش گوئی کے مطابق منگل کو شام سات بجے نیویارک میں پہنچا اور بدھ کی صبح تک جاری تھا۔ نیویارک ، نیو جرسی اور کنیکٹیکٹ میں ایک فٹ سے زیادہ برف گری ہے، جس سے نیویارک میں کام پرجانے والے ہزاروں افراد کو مشکلات کا سامنا رہا۔

نیویارک کے اکثر سکول بنداور ہزاروں پروازیں معطل کردی گئي ہیں، جس سے ہزاروں مسافروں کے ہوائی اڈوں پر پھنس کر رہ جانے کا امکان ہے۔

نیویارک سے حسن مجتبیٰ نے بتایا ہے کہ میئر مائیکل بلوم برگ کو گذشتہ برس کرسمس پر آنے والے شدید برفانی طوفان کے دوران سہولیات کی عدم فراہمی کے باعث سخت تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

اس مرتبہ انھوں نے اعلان کیا ہے کہ ان کا دفتراور عملہ اپنے تمام وسائل کے ساتھ صورتحال سے نمٹے کے لیے مکمل طور تیار ہے، تاہم انھوں نے کام پر آنے اور جانے والوں کو خبردار کیا کہ ذرائع آمدو رفت میں مشکلات کا سامنا کرنا ہوگا۔

میئر نے پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ نجی ٹھیکیداروں نے برف ہٹانے کے لیے سینکڑوں مزدور بھی بھرتی کیے ہیں۔

ارب پتی میئر مائیکل بلومبرگ تیسری بار نیویارک شہر کا میئر منتخب ہوئے ہیں۔

امریکہ کے قومی موسمیاتی ادارے نے منگل کی شام کو امریکہ کے شمال مشرق میں آنے والےبرفانی طوفان میں نیویارک سمیت متعدد علاقوں میں بدھ کی دوپہرتک پانچ سے چودہ انچ برف پڑنے کی پیش گوئی کی ہے۔

امریکہ کی جنوبی ریاستوں میں برفباری اور خراب موسم سے نمٹنے کے لیے پوری طرح تیار نہ ہونے کی باعث کم از کم گیارہ ہلاکتیں ہوچکی ہیں۔

اسی بارے میں