’ہم نے سرکوزی کی انتخابی مہم میں پیسہ لگایا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ہمارے پاس مسٹر سرکوزی کو پیسے دینے کی تمام تفصیلات ہیں اور ہم لوگوں کو ان تفصیلات سے جلد آگاہ کر دیں گے: سیف

لیبیا کے رہنما کرنل قدافی کے صاحبزادے نے الزام عائد کیا ہے کہ طرابلس نے سنہ دو ہزار سات میں فرانس کے انتخابات میں نکولس سرکوزی کی صدراتی مہم کے لیے پیسے دیے تھے۔

کرنل قدافی کے صاحبزادے سیف الاسلام نے کہا ’ہم نے سرکوزی کی انتخابی مہم پر پیسے خرچ کیے اور ہمارے پاس اس حوالے سے تمام تفصیلات موجود ہیں اور ہم ان کا پوری طرح سے انکشاف کرنے کے لیے تیار ہیں۔‘

یورو نیوز ٹی وی چینل پر سیف الاسلام کا یہ انکشاف لیبیا کے سرکاری ٹی وی پر صرف چند دن قبل دی جانے والی اس اطلاع کے بعد ہوا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ ’نکولس سرکوزی کے بارے میں ایک ایسا راز ہے‘ جو ان کی حکومت گرا دے گا۔

فرانس دنیا کا وہ پہلا ملک ہے جس نے لیبیا کے باغیوں کی حکومت تسلیم کی ہے۔

فرانس کے صدارتی محل نے مسٹر سرکوزی کے لیبیا سے فائدہ اٹھانے کی تردید کی ہے۔ ایک ترجمان نے ویب لی مون ڈیس ویب سائٹ سے بات کرتے ہوئے کہا ’بالکل واضح ہے کہ ہم اس الزام کی تردید کرتے ہیں۔‘

لیبیا نے دھمکی دی تھی کہ اگر فرانس نے لیبیا کے باغیوں کو وہاں کے عوام کے جائز نمائندے تسلیم کیا تو وہ ’اہم راز‘ کے بارے میں مزید انکشافات کرے گا۔

فرانس ان کوششوں میں بھی آگے آگے ہے کہ لیبیا پر نو فلائی زون قائم کیا جائے تا کہ کرنل قدافی کی افواج باغیوں پر بمباری نہ کر سکیں۔

اپنے انٹرویو میں کرنل قدافی کے صاحبزادے سیف نے کہا کہ مسٹر سرکوزی کو جنھیں وہ ’مسخرہ‘ کہہ کر پکارتے رہے، اس لیے مدد دی گئی تھی تاکہ وہ لیبیا کے عوام کی مدد کر سکیں۔

تاہم سیف کا کہنا تھا کہ ’سرکوزی نے ہمیں مایوس کیا ہے۔ ہمارے پیسے واپس کرو۔ ہمارے پاس مسٹر سرکوزی کو پیسے دیے جانے کی تمام تفصیلات ہیں اور ہم ان تفصیلات سے جلد ہی لوگوں کو آگاہ کر دیں گے۔‘

جب سنہ دو ہزار سات میں لیبیا کے رہنما کرنل قدافی نے فرانس کا دورہ کیا تھا تو نکولس سرکوزی نے ان کا استقبال کیا تھا۔ اس سے کئی ماہ قبل فرانس کے رہنما کی سابقہ اہلیہ سیسلیا بلغاریہ کے چھ ڈاکٹروں کی رہائی کی غرض سے طرابلس گئی تھیں۔

اسی بارے میں