عراق: تین شہروں میں دھماکے، تیرہ ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption یہ دھماکے بصرہ، فلوجہ اور بغداد میں ہوئے ہیں

عراق کے مختلف شہروں میں بم دھماکے ہوئے ہیں جن میں حکام کے مطابق تیرہ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ یہ دھماکے بصرہ، فلوجہ اور بغداد میں ہوئے ہیں۔

جنوبی شہر بصرہ میں خودکش بمبار نے اپنے آپ کو شیعہ مسئلک کی ایک مسجد کے پاس دھماکے سے اڑا دیا جس کے نتیجے میں تین افراد ہلاک جبکہ پچاس کے قریب زخمی ہوئے۔

موقع پر موجود ایک پولیس افسر نے خبررساں ادارے رائٹرز کو بتایا کہ بغداد سے سوا چار سو کلومیٹر جنوب میں واقع بصرہ میں دھماکے کے بعد کئی گاڑیوں اور دوکانوں میں آگ لگ گئی۔

دو بم دھماکے بغداد کے مغرب میں واقع فلوجہ میں ہوئے جس میں متعدد پولیس اہلکار ہلاک ہوئے۔

حکام کا کہنا ہے کہ ایک گاڑی میں خودکش حملہ آور نے پولیس کی چوکی کو نشانہ بنایا جس میں چار پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے جبکہ اس دھماکے میں پانچ دیگر پولیس اہلکار زخمی ہوئے۔ بعدازاں سڑک کے کنارے نصب بم پھٹنے سے تین عراقی فوجی زخمی ہوگئے جو گشت پر تھے۔

دارالحکومت بغداد میں ایک کار بم پھٹنے سے ایک راہگیر ہلاک جبکہ سترہ افراد زخمی ہوگئے۔ یہ دھماکہ اس وقت ہوا جب فوج کا ایک قافلہ شعیہ آبادی سے گزر رہا تھا۔

دارالحکومت کے شمال مغرب میں واقع شہر جرما میں بھی دو بم دھماکے ہوئے جن میں تین پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے جبکہ موصل میں سڑک کے کنارے نصب بم پھٹنے سے ایک فوجی ہلاک ہوگیا۔

امریکی خبررساں ادارے اے پی کے مطابق، بغداد کے مغرب میں واقع کرمہ میں ایک مسلح شخص نے پولیس چوکی پر حملہ کردیا۔ فائرنگ کے تبادلے کے بعد پولیس سٹیشن کے قریب ہی ایک کار میں بم دھماکہ ہوا جس میں پانچ پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے۔

عراق میں حالیہ دنوں میں پرتشدد واقعات میں اضافہ ہوا ہے حالانکہ سنہ دوہزار چھ اور سات کی نسبت ان واقعات میں خاطر خواہ کمی آئی ہے۔

اسی بارے میں