شمالی کوریا:کم جونگ ال کا پیٹہ سرکاری سرکاری تقریبات میں شریک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption عوام پلاسٹک کے پھول ہلا کر خوشی کا اظہار کر رہے ہیں

شمالی کوریا کے رہنماء کم جونگ اِل نے سرکاری تقریبات میں اپنی بیٹے اور جانشیں کم جونگ آن کے ساتھ شرکت کرنا شروع کر دیا ہے۔

مشترکہ طور پر سرکاری تقریبات میں شرکت شمالی کوریا میں ایک غیر معمولی بات ہے اور مبصرین کے خیال میں تیسری نسل کو اقتدار منتقل کرنے کے عمل کے شروع ہونے کا ایک واضح اشارہ ہے۔

شمالی کوریا کے تریسٹھویں یوم آزادی کے موقع پر فوجی پریڈ کی ٹی کوریج میں سرکاری ٹی وی پر کم جونگ ال کو اپنے بیٹے کے ساتھ فوجی ساز و سامان کی ستائش میں سٹیج پر تالیاں بجاتے ہوئے دکھایا گیا۔

کم جونگ آن فور سٹار جنرل ہیں اور ان کے پاس کمیونسٹ پارٹی کے فوجی کمیشن کے نائب چیئرمین کا عہدہ ہے۔

کم جونگ آن کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے وہ پیچیس سے تیس برس کے ہیں اور وہ پہلی مرتبہ گزشتہ سال اکتوبر میں اپنے والد کے ہمراہ ایک فوجی پریڈ میں شریک ہوئے تھے۔ اُس وقت قیاس کیا جا رہا تھا کہ ان کے والد کی صحت کی خرابی کی وجہ سے اقتدار منتقل کرنے کا عمل شروع کر دیا گیا ہے۔

کم جونگ آن جمعہ کو ایک مرتبہ پھر اپنے والد کے ساتھ پیانگ یانگ کے مرکزی سکوائر پر ایک بالکونی سے فوجی پریڈ کا معائنہ کرتے ہوئے نظر آئے جہاں سے وہ لوگوں کے نعروں کا ہاتھ ہلا ہلا کر جواب دے رہ تھے۔

سکوائر میں موجود مجعع عام پلاسٹک کے گلابی پھول ہوا میں لہرا لہرا کر نوجوان کم کے والد اور دادا کو خراج تحسین پیش کر رہا تھا۔ انیس سو اڑتالیس میں شمالی کوریا کے قیام کے بعد سے اب تک کم صرف یہ دو رہنما ہی گزرے ہیں۔

بی بی کی نمائندہ لوسی ولیمسن نے سیول سے اطلاع دی ہے کہ فوجی ساز و سامان کی نمائش سے شمالی کوریا کی حکومت اپنی طاقت اور خودانحصاری کا پروپگنڈہ کرتی ہے۔

نامہ نگار کے مطابق ان سرکاری تقریبات اور طمتراق سے پورے ملک کے بہت سے حصے خوراک کی کمی کا شکار ہیں اور ملک کو زرمبادلہ کی شدید کمی کا سامنا ہے۔

اسی بارے میں