امریکہ:’ٹیکس کی شرح میں اضافے کا منصوبہ‘

اوبامہ تصویر کے کاپی رائٹ bbc
Image caption صدر اوباما بجٹ خسارے میں کمی کے لیے طویل المدتی منصوبہ کانگرس میں پیش کرنے والے ہیں

امریکہ کے صدر براک اوباما دولت مند امریکیوں پر ٹیکس کی زیادہ سے زیادہ شرح لاگو کرنے کے بارے میں منصوبہ سازی کر رہے ہیں۔

اس منصوبے کے تحت اس بات کو یقینی بنایا جا سکے گا کہ وہ لوگ بھی اُسی شرح سے ٹیکس ادا کریں جس طرح کم دولت مند لوگ دیتے ہیں۔

وائٹ ہاؤس کے حکام کا کہنا ہے کہ صدر اوباما اپنے منصوبے کی تفصیلات پیر کے روز فراہم کریں گے جب وہ بجٹ خسارے کو کم کرنے کے لیے اپنا طویل المدتی منصوبہ پیش کریں گے۔

اطلاعات کے مطابق ٹیکس کی شرح میں اضافے کے اس منصبوے کان ’بفیٹ رُول‘ رکھا جائے گا جو کہ ایک ارب پتی سرمایہ کار وارین بفیٹ کے نام پر ہے۔

وارین بفیٹ کا کہنا ہے کہ خامیوں کا مطلب ہے کہ امیر ترین لوگ نسبتاً کم ٹیکس ادا کرتے ہیں۔

یہ اس وجہ سے ہے کہ سرمایہ کاری سے حاصل ہونے والی کمائی پر شرحِ ٹیکس تنخواہ کی نسبت کم ہوتی ہے۔

نئی مجوزہ شرح ٹیکس ان امریکیوں پر لاگو ہوگی جو دس لاکھ ڈالر سالانہ یا اس سے زیادہ کماتے ہیں۔

اس تجویز کو کانگرس میں شدید مخالفت کا سامنا ہوگا کیونکہ حزب اختلاف کی جماعت ریپبلکن نے اعلان کر رکھا ہے کہ وہ ٹیکس میں اضافے کی کسی بھی تجویز کی مخالفت کریں گے۔

امریکہ میں معیشت سست رفتاری کا شکار ہے اور یہاں بے روزگاری کی شرح میں اضافہ ہو رہا ہے جو نو فیصد تک پہنچ گئی ہے۔

اسی بارے میں