فلپائن: طاقتور طوفان سے لاکھوں متاثر

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption نیسیٹ نامی طوفان کے متعلق کہا جا رہا ہے کہ یہ اس سال کا سب سے طاقتور طوفان ہے

ایک طاقتور طوفان کے ٹکرانے سے فلپائن کے دارلحکومت منیلا میں بجلی منقطح ہو گئی ہے اور سیلاب کا خدشہ ہے۔

’نیسیٹ‘ نامی طوفان کی وجہ سے فلپائن سٹاک ایکسچینج اور شہر کا امریکی سفارت خانہ بھی بند کردیا گیا ہے۔

اب تک موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق طوفان کے ٹکرانے سے ایک بچے سمیت دو افراد ہلاک اور چار لاپتہ ہوگئے ہیں۔

طوفان کے آتے ہی فلپائن کے مرکزی صوبہ ایلبے میں حکام نے ایک لاکھ افراد کو علاقہ خالی کرنے کا حکم دے دیا تھا۔ اس سے قبل صوبے کے مختلف علاقوں سے ایک لاکھ سے زیادہ افراد پہلے محفوظ مقامات پر منتقل ہو چکے تھے۔

اطلاعات ہیں کہ طوفان فلپائن سے گزرتا ہوا رواں ہفتے جمعرات کو جنوبی چین سے ٹکرائے گا۔

بی بی سی کے کیٹ میکگیون نے بتایا کہ ایک سو ستر کلومیٹر کی رفتار سے چلنے والی ہوائیں فی الوقت لوزن نامی جزیرے سے گزر رہی ہیں جہاں فلپائن کی آدھی سے زیادہ آبادی مقیم ہے۔

ہمارے نامہ نگار کے مطابق بیشتر سڑکیں زیرِ آب ہیں اور فلائٹیں کینسل کی جا رہی ہیں۔

اس سے قبل منیلا میں سکول، آفس اور یونیورسٹیاں بند کر دی گئی تھیں اور حکام نے شہریوں کو اپنے گھروں سے باہر نہ نکلنے کی ہدایت کی تھی۔

تاہم اب تک ایک بچے کی دریا میں گر جانے کی وجہ سے ہلاکت کی تصدیق ہوئی ہے اور مزید ہلاکتوں کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔

خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق صوبے کے گورنر جوئی سالسیڈا کا کہنا تھا ’ہم طوفانوں کو تو نہیں روک سکتے لیکن اس کے نتیجے میں ہونے والے نقصانات سے محفوظ رہنے کی تیاری کر سکتے ہیں۔‘

ہمارے نامہ نگار کے مطابق فلپائن میں اگرچہ بیشتر طوفان آتے ہیں لیکن نیسیٹ نامی طوفان کے متعلق کہا جا رہا ہے کہ یہ اس سال کا سب سے طاقتور طوفان ہے۔

یاد رہے کہ فلپائن میں دو سال پہلے کیٹسانہ نامی طوفان آیا تھا جس کی وجہ سے چار سو افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

اسی بارے میں