عراق اٹھارہ ایف سولہ طیارے خریدے گا

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ’لڑاکا طیاروں کی خریداری عراق کی فضائی سرحدوں کی خودمختاری کی بنیاد فراہم کرتی ہے‘

امریکی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ عراق امریکہ سے تین ارب ڈالر مالیت کے اٹھارہ ایف سولہ لڑاکا طیارے خریدے گا جس کے لیے اس نے جزوی رقم ادا کردی ہے۔

عراق یہ لڑاکا طیارے اپنی فضائی سرحدوں کی حفاظت کے لیے خرید رہا ہے جو اس اگلے سال سے پہلے ملنے کی توقع نہیں ہے۔

عراق میں اس وقت چوالیس ہزار امریکی فوجی موجود ہیں جو اس سال کے آخر تک عراق سے چلے جائیں گے۔

امریکی اور عراقی اہلکاروں کا کہنا ہے کہ لڑاکا طیاروں کی خریداری عراق کی فضائی سرحدوں کی خودمختاری کی بنیاد فراہم کرتی ہے۔

عراقی حکومت کے ترجمان علی الدباغ کا کہنا ہے ’عراقی سلامتی اور بیرونی خطرات سے نمٹنے کے لیے فضائی نگرانی ایک اہم امر ہے۔‘

ان کے بقول ’عراق اپنی فضائی سرحدوں کے دفاع کے لیے اپنے آپ پر انحصار کرنا چاہتا ہے بجائے اس کے کہ یہ دوسرے ممالک سے اس بابت درخواست کرے اور خاص طور پر ایسے وقت جب ہم جانتے ہیں کہ امریکی فوج اس سال کے آخر تک چلی جائے گی۔‘

انہوں نے کہا کہ عراق نے لڑاکاطیاروں کی خریداری کے سلسلے میں اب تک ایک ارب چالیس کروڑ ڈالر کی جزوی ادائیگی کردی ہے۔