برطانیہ: بے روزگاروں کی تعداد میں اضافہ

Image caption بے روزگار افراد میں نوجوانوں کی تعداد زیادہ ہے۔

برطانیہ میں جون اور اگست کے دوران بے روزگار افراد کی تعداد میں ایک لاکھ چودہ ہزار کا اضافہ ہوا ہے۔

تازہ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق یہ تعداد اب پچیس لاکھ ستر ہزار ہو گئی ہے جوگزشتہ سترہ برس کے دوران سب سے زیادہ اضافہ ہے۔

برطانیہ کے قومی شماریات کے دفتر کے مطابق بے روزگاری کی شرح میں آٹھ عشاریہ ایک فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

بے روزگاری الاؤنس لینے والوں کی تعداد میں سترہ ہزار پانچ سو کا اضافہ ہوا ہے جس سے ستمبر میں یہ سہولت حاصل کرنے والوں کی تعداد اب سولہ لاکھ ہو گئی ہے۔

بے روزگار افراد میں زیادہ تعداد سولہ سے چوبیس بر س کے لوگوں کی ہے جو نو لاکھ اکیانوے ہزار ہو گئی ہے جو اس عمر کے بے روزگار افراد کی تعداد میں بھی ریکارڈ اضافہ ہے۔

برطانیہ میں روزگار کے وکیل کرس گریلنگ کا کہنا ہے کہ ملک جس صورتحال سے گزر رہا ہے وہ عالمی معاشی بحران کا نتیجہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگرچہ برطانیہ یورو زون کا حصہ نہیں ہے لیکن یونان اور یورو زون میں شامل کچھ اور ممالک کی صوررتحال سے متاثر ہوا ہے۔

برطانوی حکومت نے بجٹ کے خسارے کو کم کرنے کے مختلف منصوبے متعارف کرائے ہیں لیکن کچھ معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ ان منصوبوں سے معاشی ترقی متاثر ہو رہی ہے۔

اسی بارے میں