معتصم قذافی کی گرفتاری کی متضاد خبریں

متصم قذافی تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption متصم اپنے والد کے قومی سلامتی کے مشیر کے فرائض بھی انجام دیتے ہیں

لیبیا سے ایسی متضاد خبریں آ رہی ہیں کہ معزول صدر کرنل قذافی کے بیٹے معتصم قذافی کو ’گرفتار‘ کر لیا گیا ہے۔

خبر رساں ادارے قومی عبوری کونسل کے ایک افسرحوالے سے بتا رہے ہیں کہ معتصم قذافی کو سرت میں گرفتار کیا گیا ہے۔

تاہم سرت میں حکام اس دعوے کی تصدیق نہیں کر سکے اس خبر کے بعد متعدد شہروں میں باغیوں نے جشن منانا شروع کر دیا ہے۔

عبوری کونسل کی افواج کا کہنا ہے کہ اب سرت کے زیادہ تر علاقوں پر ان کا کنٹرول ہے۔

ماضی میں بھی قذافی کے دوسرے بیٹے اور ان کے ترجمان موسٰی ابراہیم کی گرفتاریوں کی غلط افواہیں پھیل چکی ہیں۔

تروپلی میں بی بی سی نامہ نگار کیرولائن ہاؤلی کا کہنا ہے کہ اگر معتصم قذافی کی گرفتاری کی خبر کی تصدیق ہو جاتی ہے تو یہ قومی عبوری کونسل کی اب تک کی سب سے بڑی کامیابی ہوگی۔

معتصم قذافی کرنل قذافی کی فوج میں ایک سینئیر اہلکار ہیں اور اپنے والد کے قومی سلامتی کے مشیر کے فرائض بھی انجام دیتے ہیں۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ اگر معتصم پکڑے گئے تو کونسل ان سے ان کے والد اور دیگر اہم شخصیات کے بارے میں معلوم کرنا چاہے گی کہ وہ کہاں ہیں۔

اسی بارے میں