یونان میں ملک گیر ہڑتال کا دوسرا دن

ایتھنس تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption حکومت کے بچت اقدامات کے خلاف ہزاروں مظاہرین ایتھنز کی سڑکوں پر نکلے ہیں

یونان میں حکومت کے بچت اقدامات سے ناراض مظاہرین جمعرات کو دوسرے روز بھی زبردست احتجاج کی تیاریاں کر رہے ہیں۔دوسری طرف یونان کی پارلیمان میں بچت کے لیے کڑے اقدامات کے بل پر رائے شماری بھی ہو رہی ہے۔

گزشتہ روز بھی ایک لاکھ کے قریب مظاہرین اور پولیس کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں جبکہ دو روزہ عام ہڑتال کی وجہ سے ملک بھر میں نظامِ زندگی معطل ہو کر رہ گیا ہے۔

گزشتہ روز کچھ مظاہرین نے پولیس پر دھوئیں کے بم پھینکے اور پتھراؤ کیا جس کے جواب میں پولیس نےاشک آورگیس کا استعمال کیا۔

حکومت کی جانب سے تازہ ترین بچت اقدامات پر پارلیمان میں ووٹنگ کی تیاری کے پیشِ نظر عام ہڑتال کی اپیل دی گئی تھی اور اس دوران ملک بھر میں تمام پروازیں منسوخ کر دی گئیں اور تمام دفاتر اور کاروبار بند رہے۔

یونان میں حکومت خسارے کو کم کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ اس بات کا اندیشہ ہے یونان دیوالیہ ہو سکتا ہے اور اگر ایسا ہوا تو یوروزون میں شدید بحران پیدا ہو جائےگا۔

یورپی یونین اور آئی ایم ایف نے دو بار مالی مدد کرنے کے عوض یونان سے شدید کٹوتیوں کا مطالبہ کیا ہے جس پر حکومت نے اب تک ریٹائرمنٹ کی عمر بڑھانے اور سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں کٹوتی کے اقدامات کر لیے ہیں۔

گزشتہ کئی ہفتوں سے یونان میں احتجاجی مظاہروں میں شدت آ رہی ہے اور ہر اقتصادی شعبے میں ہڑتالوں کا سلسلہ جاری ہے۔ بدھ اور جمعرات کی عام ہڑتال کی اپیل سرکاری اور نجی سیکٹر کی دو بڑی یونینوں نے کی ہے۔

ہڑتال کے سبب تمام سرکاری شعبے، دفاتر، تجارتی ادارے اور دوکانیں بند ہیں اس کے ساتھ ہی پہلی مرتبہ چھوٹے کاروبار اور دوکاندار بھی ہڑتال میں شرکت کر رہے ہیں۔

اس کے علاوہ ائر ٹریفک کنٹرولرز نے بھی بارہ گھنٹے کے واک آؤٹ کا اعلان کیا ہے جس کی وجہ سے ڈیڑھ سو کے قریب اندورنِ ملک اور بین الاقوامی پروازیں منسوخ کر دی گئیں۔

دارالحکومت ایتھنز میں پولیس کے تقریباً تین ہزار اہلکار تعینات کیے گئے ہیں جبکہ اس کے علاوہ پارلیمان کی عمارت کے باہر فساد سے نمٹنے کی ماہر پولیس تعینات ہے۔

پارلیمان کی عمارت کے باہر پولیس اور مظاہرین میں جھڑپیں ہوئی ہیں اور ٹی وی کی فوٹیج میں دکھایا گیا ہے کہ مظاہرین پولیس پر دھواں بم اور پتھر پھینک رہے ہیں۔پولیس کے مطابق مظاہرین میں سے چار نوجوانوں کوگرفتار کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں