کرنل قذافی کی ہلاکت کی تحقیقات کرانے کا اعلان

مصطفٰی عبدالجلیل تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption لیبیا کی نیشنل ٹرانزیشنل کونسل کے سربراہ مصطفٰی عبدالجلیل

لیبیا کی نیشنل ٹرانزیشنل کونسل کے سربراہ مصطفٰی عبدالجلیل نے کرنل قذافی کی ہلاکت کی تحقیقات کرانے کا اعلان کیا ہے۔

واضح رہے کہ عبوری حکومت کے خارجہ امور کے ترجمان احمد جبریل نے سنیچر کو بی بی سی کو بتایا تھا کہ قذافی کی لاش کا پوسٹ مارٹم کیا جا چکا ہے جب کہ عبوری حکومت کے ایک طبی اہلکار کا کہنا تھا کہ پوسٹ مارٹم کی کوئی ضرورت نہیں ہے کیونکہ ابتدائی طبی معائنے کی رپورٹ میں موت کے اسباب کا پتہ چل گیا تھا۔

بی بی سے کے نامہ نگار نے اس بارے میں بتایا تھا کہ کرنل قذافی کی لاش مصراتہ کے ایک سرد خانے میں رکھی ہے اور لاش دیکھنے سے معلوم ہوتا ہے کہ ان کے جسم پر زخموں کے کئی نشان ہیں اور ان کے سر پر چوٹ لگی ہے۔حالانکہ یہ واضح نہیں ہے کہ ان کے سر پرگولی کیسے لگي تھی جو کہ ان کی موت کی اصل وجہ بتائی جاتی ہے۔

اقوامِ متحدہ کی کمشنر برائے انسانی حقوق نے معمر قذافی کی ہلاکت کی شفاف تحقیق کا مطالبہ کیا تھا۔

اقوامِ متحدہ کے حقوقِ انسانی کمیشن کا کہنا تھا کہ اس بات کی تحقیقات بھی ہونی چاہیئں کہ لیبیا کے سابق حکمران کرنل معمر قدافی کی ہلاکت کیسے ہوئی۔

حقوقِ انسانی کے لیے اقوامِ متحدہ کی ہائی کمشنر نوی پلے کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ موبائل فون سے بننے والی ویڈیو فلم سے پتہ چلتا ہے کہ معمر قذافی کو زندہ حراست میں لیا گیا تھا اور اس کے بعد ان کی ہلاکت ہوئی۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ صورتحال انتہائی تشویشناک ہے اور اس کی تحقیقات لازمی ہیں۔

لیبیا کے عبوری وزیر اعظم محمود جبریل نے بھی کہا تھا کہ کرنل قذافی کو زندہ حالت میں پکڑا گیا تھا لیکن وہ ہسپتال پہنچنے سے پہلے ہی ان زخموں کی تاب نہ لاسکے جو انہیں جنگ کے دوران آئے تھے۔

دوسری طرف مصراتہ میں اس سرد خانے کی نگرانی کرنے والے اہکار نے اس عمارت کا دروازہ بند کر دیا ہے جہاں وہ ریفریجریٹر رکھا ہے جس میں کرنل قذافی اور ان کے بیٹے کی لاشیں رکھ کر نمائش کی جا رہی تھی۔

اس اہلکار کا کہنا ہے کہ اسے حکم ملا ہے کہ اب کسی کو یہ لاش نہ دیکھنے دی جائے۔

اس کے علاوہ ابھی یہ بات بھی سامنے نہیں آئی کہ کرنل قذافی کو کہاں اور کیسے دفن کیا جائے گا۔ اس سے پہلے اس بارے میں جو اطلاعات آتی رہی ہیں ان کے مطابق اس بات پر بھی غور کیا جا رہا تھا کہ انہیں خفیہ طور پر دفنا دیا جائے

اسی بارے میں