سعودی عرب: شہزادہ نائف ولی عہد مقرر

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption شہزادہ نائف بن عبدالعزیز سنہ انیس سو پچہتر سے ملک کے وزیر داخلہ ہیں

سعودی عرب میں السعود خاندان کے شہزادہ نائف بن عبدالعزیز کو نیا ولی عہد مقرر کیا گیا ہے۔

اٹھتر سالہ شہزادہ نائف سنہ انیس سو پچہتر سے سعودی عرب کے وزیر داخلہ ہیں اور اب ان کے پاس ڈپٹی وزیراعظم کا عہدہ بھی ہو گا۔

شہزادہ نائف مرحوم ولی عہد سلطان کے بھائی ہیں اور شاہ عبداللہ کے برعکس وہ اپنے بھائی کی طرح ملک میں اصلاحات کرنے کے زیادہ حامی نہیں سمجھے جاتے ہیں۔

سعودی عرب کے سرکاری ٹیلی ویژن پر شاہی عدالت کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ شاہ عبداللہ نے ملک میں جانشینی کا فیصلہ کرنے والی کونسل سے ملاقات کے بعد شہزادہ نائف کا نام نامزد کیا ہے۔

یہ کونسل سال دو ہزار چھ میں قائم کی گئی تھی تاکہ قدامت پسند اسلامی سلطنت میں جانشین کو مقرر کرنے کا عمل باآسانی اور منظم طریقے سے طے پا سکے۔

سعودی عرب میں اب تک شاہ عبداللہ کے بیٹوں کو ہی جانشین مقرر کیا جاتا ہے۔ شاہ عبداللہ نے سنہ انیس سو دو سے انیس سو ترپن تک اپنی بادشاہت کے دوران موجودہ سعودی عرب کی بنیاد رکھی تھی۔

خیال کیا جا رہا ہے کہ اگلا ولی عہد شہزادہ نائف کا چھوٹا بھائی شہزادہ سلمان ہونگے جو ریاض کے گورنر ہیں۔

خیال رہے کہ گزشتہ دنوں ولی عہد سلطان بن عبدالعزیز امریکہ کے ہسپتال میں انتقال کر گئے تھے۔

ولی عہد عبدالعزیز نیو یارک کے ہسپتال میں زیرِ علاج تھے۔ ان کو سرطان کا مرض تھا۔ وہ سعودی عرب کے تقریباً پچاس سال وزیر دفاع تھے۔

اسی بارے میں