یورپ کی چین سے مالی مدد کی درخواست

کلاؤس ریگلنگ تصویر کے کاپی رائٹ afp
Image caption کلاؤس ریگلنگ، یوروزون میں قرضوں کے بحران سے نمٹنے کے لیے بنائِ گئے فنڈ کے سربراہ

یوروزون میں قرضوں کے بحران سے نمٹنے کے لیے بنائے گئے فنڈ کے سربراہ کوشش کر رہے ہیں کہ یورپی ممالک کے قرضے کم کرنے کے لیے چین ان کی ایک سکیم میں سرمایہ لگائے۔

چینی رہنماؤں سے ملاقات کے بعد، کلاؤس ریگلنگ نے کہا کہ ابھی اس سلسلہ میں کوئی باضابطہ مزاکرات نہیں ہوئے اور نہ ہی کوئی معاہدہ طے پایا ہے۔

خیال کیا جا رہا ہے کہ یوروزون کی معیشت کو قرضوں سے نکالنے کے لیے بنائے گئے فنڈ میں چین سو ارب ڈالر ڈالے گا۔

اس دوران فرانس کے صدر نکولس سارکوزی نے کہا ہے کہ قرضوں تلے دبے یونان کو یوروزون میں شامل کرنا ایک غلطی تھی۔ ان کے مطابق دو ہزار ایک میں یونان یوروزوں میں شامل ہونے کے لائق نہیں تھا۔

تاہم صدر سارکوزی نے کہا کہ اس وقت یونان کو ایک نئے معاہدے کے تحت قرضوں کے بحران سے بچایا جا سکتا ہے۔

گزشتہ رات یورپی رہنما دیر تک ایک ایسے معاہدے پر کام کرتے رہے جس کے تحت اس بحران کو مزید ممالک تک پہنچنے سے روکا جا سکے۔ معاہدہ طے پاتے ہی آج پوری دنیا کے حصص بازاروں میں تیزی دیکھی گئی۔

چین نے یہ واضح کر دیا ہے کہ اگر وہ یوروزون کو قرضوں کے بحران سے بچانے کے لیے بنائے گئے فنڈ میں سرمایہ ڈالتا ہے تو اسے اس سرمایے کی حفاظت کے لیے ٹھوس ضمانت چاہیے۔

عالمی بینک کے سربراہ روبرٹ زولیک نے کہا ہے کہ چین یورپ میں صرف اس صورت میں سرمایہ ڈالے گا، جب اس کو خود بھی اس سے کوئی فائدہ ہو۔

اسی بارے میں