میکسیکو کی جیل سے جسم فروش خواتین برآمد

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption چھ خواتین قیدی مرد قیدیوں کے وارڈ میں رہ رہی تھیں

میکسیکو کی ایک جیل میں اچانک معائنے کے دوران انیس جسم فروش خواتین، ایک سو پلازما ٹیلیویژن، میری جوانا کے دو تھیلے اور دیگر اشیاء برآمد ہوئیں ہیں۔

اکاپلکو جیل میں یہ انکشاف اس وقت ہوا جب مقامی پولیس جیل سے قیدیوں کو زیادہ محفوظ جیلوں میں منتقل کرنے پہنچی۔

معائنے کے دوران یہ بھی معلوم ہوا کہ چھ قیدی خواتین، مرد قیدیوں کے وارڈ میں رہ رہی ہیں۔

میکسیکو کی جیلوں میں گنجائش سے زیادہ قیدی موجود ہیں، ان میں بدعنوانی عام ہے اور ان جیلوں میں گروہی تصادم کے واقعات بھی معمول ہیں۔

یہ پہلی مرتبہ نہیں کہ میکسیکو میں کسی جیل سے پرتعیش اشیاء یا اسلحہ برآمد ہوا ہو۔

رواں برس جولائی کے مہینے میں ریاست سونارا کی ایک جیل میں قیدی لاٹری چلا رہے تھے جبکہ ایک وارڈ کو انہوں نے ریفریجریٹر، ائرکنڈشنرز اور ڈی وی ڈی پلیئر سے مزیّن کیا ہوا تھا۔

انسانی حقوق کے دفاع کے ریاستی کمیشن کے ایک انسپکٹر ہیپولیٹو لوگو کورٹیس نے حال ہی میں ریاست گوئیریرو میں پانچ جیلوں کی حالت زار پر تشویش کا اظہار کیا ہے جن میں اکاپلکو کی جیل بھی شامل ہے۔

ان کے بقول ان جیلوں میں قیدی اپنی خواہشات اور روایات کے تحت معاملات چلا رہے ہیں جہاں جیل کے حکام کا برائے نام یا بالکل بھی کنٹرول نہیں ہے۔

اسی بارے میں