مراکش: انتخابات میں اسلام پسندوں کی فتح

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption مراکش کی وزارتِ داخلہ کے مطابق انتخابات میں ووٹ ڈالنے کی شرح پینتالیس فیصد رہی

مراکش میں حکام کے مطابق اعتدال پسند اسلامی جماعت جسٹس اینڈ ڈویلپمنٹ پارٹی (پی جے ڈی) نے پارلیمانی انتخابات جیت لیے ہیں۔

مراکش کے وزیرِ داخلہ نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ انتخابی نتائج کے مطابق پی جے ڈی نے تین سو پچانوے کے پارلیمان میں اسی نشستوں پر کامیابی حاصل کی ہے۔

نتائج کے مطابق پی جے ڈی مراکش کے انتخابات میں اکثریتی پارٹی بن جائے گی اور اسے حکومت بنانے کا حق حاصل ہو گا۔

مراکش کے بادشاہ محمد ششم نے امید ظاہر کی ہے کہ ان انتخابات کے نتیجے میں ملک میں جاری مظاہروں میں کمی ہو جائے گی۔

پی جے ڈی کے رہنما عبداللہ بین کی رین نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ وہ مراکش کی عوام کا شکریہ ادا کرتے ہیں جنہوں نے ان کی جماعت کو ووٹ دیا۔

واضح رہے کہ مسٹر بین کی رین نے ان انتخابات میں نوے سے سو نشستوں پر کامیابی کی پیشنگوئی کی تھی۔

مراکش کے نئے آئین کے مطابق بادشاہ محمد ششم انتخابات میں اکثریت حاصل کرنے والی جماعت سے وزیرِ اعظم نامزد کرنے کے پابند ہیں۔

مراکش کے وزیرِ اعظم عباس الافاسی نے سینچر کو ایک بیان میں کہا تھا کہ ان کی جماعت پے جے ڈی کے ساتھ اتحاد کے لیے تیار ہے۔

انہوں نے خبر رساں ادارے رائیٹرز کو بتایا کہ پی جے ڈی کی فتح جمہوریت کی فتح ہے۔

مراکش کی وزارتِ داخلہ کے مطابق انتخابات میں ووٹ ڈالنے کی شرح پینتالیس فیصد رہی۔

اسی بارے میں