امریکہ میں بے روز گاری کی شرح میں کمی

فائل فوٹو تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption کئی لوگوں نے مایوس ہو کر ملازمت کے حصول کی کوششیں ترک کر دیں۔

امریکہ میں نومبر کے مہینے میں بے روز گاری کی شرح تیزی سے کم ہو آٹھ اعشارہ چھ فیصد پر آ گئی ہے جو دو برسوں میں کم ترین سطح ہے۔

سرکاری اعدادوشمار کے مطابق اس سے پہلے بے روز گاری کی شرح نو فیصد تک تھی۔

امریکی وزارتِ افرادی قوت کا کہنا ہے کہ امریکی معشیت نے نومبر کے مہینے میں ایک لاکھ بیس ہزار نئی ملازمتیں فراہم کیں۔

امریکہ کئی مہینوں سے اقتصادی پیداور کی سُست روی کا سامنا کر رہا ہے ایسے میں بے روزگاری کی شرح بھی بڑھتی جا رہی تھی۔

امریکہ میں بے روز گاری کی شرح میں آنے والی کمی کی ایک وجہ یہ بھی ہے کہ لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے نومبر کے مہینے میں ملازمتوں کی تلاش ترک کر دی اور اسی وجہ سے وہ افرادی قوت میں شمار ہی نہیں کیے گئے۔

اس رپورٹ کے سامنے آنے کے بعد امریکی بازارِ حصص ڈاؤ جان انڈیکس میں اضافہ دیکھنے میں آیا۔

نومبر کہ مہینے میں جہاں سرکاری ملازمتوں میں کمی آئی وہیں نجی شعبوں نے ایک لاکھ چالیس ہزار ملازمتیں فراہم کیں۔ کاروباری سیکٹر میں سب سے زیادہ پچاس ہزار ملازمتیں دی گئیں۔

مبصرین ملازمتوں کے اعدادوشمار کو حوصلہ افزا قرار دے رہے ہیں۔

یہ رپورٹ ان اعدادو شمار کے سامنے آنے کے ایک روز بعد ہی پیش کی گئی ہے جس کے مطابق نومبر کے مہینے میں امریکی صنعتوں میں پیداوار جون کے بعد سے سب سے زیادہ رفتار بڑھی ہے۔

اسی بارے میں