روس: حکومت کے خلاف احتجاجی مظاہرے

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پولیس نے تین سو کے لگ بھگ افراد کو حراست میں لے لیا ہے

روس کے دارالحکومت ماسکو میں منصفانہ انتخابات کے حق میں ہزاروں افراد کے مظاہرے کے بعد پولیس کی بھاری نفری تعینات کی دی گئی ہے۔

روسی وزارت داخلہ کے ترجمان کرنل وسیلی پنجگو کا کہنا ہے کہ پولیس اہلکاروں اور وزارتِ داخلہ کے اہلکاروں کی تعیناتی کا مقصد شہریوں کی حفاظت کو یقنی بنانا ہے۔

دریں اثناء ماسکو کے تاریخی ریڈ سکوائر میں وزیراعطم پوتن کے حق میں بھی مظاہرہ کیا گیا ہے۔

منصفانہ انتخابات کے حق مظاہرہ روس میں حالیہ انتخابات کے دوران حکمران جماعت کے انتخابی عمل میں اثر انداز ہونے کی اطلاعات کے پس منظر میں منعقد کیا گیا تھا۔

مظاہروں میں شریک ہونے والے شرکاء اور پولیس کے درمیان معمولی جھڑپیں بھی ہوئی ہیں اور پولیس نے تین سو کے لگ بھگ افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔

ماسکو میں مظاہرین وزیراعظم ولادی میر پیوتن کے خلاف نعرے بازی کررہے تھے اور ان سے مطالبہ کررہے تھے کہ وہ منصفانہ انتخابات کا انعقاد کرائیں۔

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ ماسکو میں ہونے والا یہ مظاہرہ حزبِ اختلاف کی جانب سے گزشتہ کئی برسوں میں سب سے بڑا مظاہرہ قرار دیا جارہا ہے۔

ان انتخابات کا جائزہ لینے والے عالمی مبصرین کے مطابق ووٹنگ کے عمل کے دوران حکمران جماعت نے اپنا اثر ورسوخ استعمال کیا۔

ان روسی پارلیمانی انتخابات میں وزیراعظم ولادی میر پیوتن کی جماعت کو اکثریت تو حاصل ہوئی ہے لیکن ان کی نشستوں کی تعداد ماضی کے مقابلے میں کم ہو گئی ہے۔

مبصرین کے مطابق انتخانی عمل میں ریاست کی جانب سے مداخلت کی گئی اور حکمران جماعت کے حق میں ووٹنگ کے دوران ہیرا پھیری کی گئی۔

امریکی سرکاری ترجمان نے بھی اس انتخابی عمل کے بارے میں اپنے شکوک و شبہات کا اظہار کیا ہے۔

امریکی ترجمان جے کارنے نے کہا ہے کہ ہمیں چار دسمبر کو منعقد کیے جانے والے انتخابات کے بارے میں خاصی تشویش ہے۔ اس تشویش کا باعث مبصرین کی وہ رپورٹس ہیں جس میں بیلٹ بکسوں میں حکومت کے حق میں جعلی ووٹوں کو ڈالنا اور ووٹرز لسٹوں میں گڑ بڑ کی نشاندہی کی گئی ہے۔

روس کے دوسرے بڑے شہر سینٹ پیٹرسبرگ میں بھی وزیراعظم ولادی میر پیوتن کے خلاف مظاہرے ہوئے جن میں مظاہرین نے منصفانہ انتخابات منعقد کرانے کا مطالبہ کیا۔

سینٹ پیٹرسبرگ میں پولیس کا کہنا ہے کہ ایک سو کے قریب مظاہرین کو امن خراب کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔

اسی بارے میں