چین: ’مقامی زبان کے استعمال پر پابندی‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ناقدین نے اس پابندی کو مقامی ثقافت کو تباہ کرنے کی سازش قرار دیا ہے

چین کی مرکزی حکومت نے سب سے زیادہ آبادی والے صوبے گؤانگ ڈونگ میں میڈیا پر مقامی زبان کے استعمال پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

حکومتی احکامات کے مطابق آئندہ برس مارچ سے کوئی بھی براڈ کاسٹر شام کے اوقات میں مقامی زبان نہیں بول سکے گا اور اگر ایسا کرنا ضروری ہو تو اس کے لیے پہلے مرکزی حکومت سے اجازت حاصل کرنی ہو گی۔

مرکزی حکومت کے مطابق شام کے اوقات میں تمام پروگرام بھی قومی زبان یعنی مینڈرن ہی میں نشر کیے جائیں گے۔

حکومت کے ناقدین کا کہنا ہے کہ حکومت ان اقدامات کے ذریعے مقامی ثقافت کو تباہ کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ برس مرکزی حکومت نے یہ تجویز پیش کی تھی کہ اس صوبے کے مقامی زبان کے تمام صداکاروں کو ملازمتوں سے فارغ کر کے ان کی جگہ قومی زبان بولنے والے بھرتی کر لیے جائیں۔

حکومت کی اس تجویز کو شدید عوامی مخالفت کا سامنا کرنا پڑا تھا جس کے بعد یہ فیصلہ واپس لے لیا گیا تھا۔