باغی جنگجوؤں کیلیے فوج، پولیس میں ملازمتیں

لیبیا تصویر کے کاپی رائٹ AFP Getty Images
Image caption لیبیا کے باغیوں پر معمر قذافی کے حامیوں کے خلاف انتقامی کارروائئوں کے الزامات ہیں۔

لیبیا کی عبوری حکومت کا کہنا ہے کہ صدر قذافی کے خلاف تحریک میں شامل سابق باغی جنگجوؤں کو ایک منصوبے کے تحت فوج میں شامل کیا جا رہا ہے۔

حکومتی وزراء کا کہنا ہے اگلے ماہ سے تمام باغیوں سے کہا جائے گا کہ اگر وہ وہ سکیورٹی فورسز میں شامل ہونا چاہتے ہیں تو خود کو رجسٹر كروائیں۔

رجسٹریشن کا کام جنوری کے پورے مہینے میں جاری رہے گا۔

اگست میں بغاوت کے خاتمے کے بعد سے کچھ باغی ملیشیاء گروپوں پر اپنا دبدبہ قائم کرنے اور ملک کے سابق رہنما کرنل قذافي کے حامیوں کے خلاف انتقامی کاررئیوں کے الزامات لگتے رہے ہیں۔

لیبیا میں بغاوت ہی کرنل قذافی کا چالیس سالہ دورِ اقتدار کا خاتمے کا باعث بنی۔

لیبیا کی عبوری حکومت کے وزیرِ داخلہ کا کہنا ہے کہ انہیں امید ہے کہ پچیس ہزار لوگ ان کے ساتھ شامل ہوں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ اتنے ہی لوگ فوج میں بھی شامل ہو سکتے ہیں۔

کرنل قذافي کے دورِ اقتدار میں سکیورٹی کی ذمہ داری ان کے بیٹوں اور کچھ مشیروں کے پاس تھی۔

اسی بارے میں