طرابلس میں جھڑپ، چار افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جھڑپ کے بعد فوجی ملیشیا کے اہلکار زاویہ کی سڑک پرجمع ہیں۔

لیبیا کے دار الحکومت طرابلس میں مسلح گروہوں کے درمیان لڑائی کے دوران چار افراد ہلاک اور کم سے کم پانچ زخمی ہو گئے ہیں۔

مصراتہ سے آنے والی فوجیوں کے ایک گروہ نے معمر قذافی کے دور مںی انٹیلیجنس کے لیے استعمال ہونے والے عمارت سے بعض قیدیوں کو رہا کروانے کی کوشش کی جس کے دوران ان کی مخالف گروہ کے ساتھ لڑائی ہو گئی۔

حکام کے مطابق ہلاکتیں دونوں جانب سے ہؤئی ہیں۔

طرابلس میں فوجی کونسل کے سربراہ نے واقعے کے بعد ایک نیوز کانفرنس میں کہا ’مجھے اس واقعے پر افسوس ہے۔ میں زیادہ تفصیلات میں نہیں جاؤں گا لیکن یہ واقعہ مصراتہ کے انقلابیوں اور زاویہ کے فوجی کونسل کے اہلکاروں کے درمیان مسئلے کا نتیجہ ہے۔‘

انہوں نے مزید کہا کہ ’جو کچھ ہوا وہ ایک غیر ذمہ دارانہ فعل ہے اور اب صورتحال قابو میں ہے اور سہ پہر کے بعد سے ہم نے گولی چلنے کے کوئی آواز نہیں سنی۔‘

لیبیا میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق کرنل معمر قدافی کے خلاف چلنے والی تحریک سے جنم لینے والی خانہ جنگی کے بعد پیدا کئی مسائل پیدا ہوئے جن میں بڑا مسئلہ ان دسیوں ہزاروں باغیوں کو منظم اور متحد کرنے کا ہے جنہوں نے آمریت کے خلاف ہتھیار اٹھائے ۔

یہ لوگ قومی فوج اور پولیس کی عدم موجودگی میں اب بھی طاقت کا استعمال کر رہے ہیں۔

لیکن اب لیبیا کی نئی حکومت نے ان گروہوں کو منظم کرنے اور انہیں دفاع اور داخلہ کے شعبوں میں شامل کر رہی ہے۔

اسی بارے میں