اٹلی: بحری جہاز کو حادثہ، چھ ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption جہاز میں ایک ہزار اطالوی، پانچ سو جرمن اور ایک سو ساٹھ فرانسیسی باشندے سوار تھے

اٹلی میں مسافر بردار بحری جہاز کے ایک حادثے کے نتیجے میں کم سے کم چھ افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

یہ حادثہ اس وقت پیش آیا جب اٹلی کا ایک بحری جہاز چار ہزار سے زیادہ افراد کو لے کر جا رہا تھا کہ ریت اور مٹی میں پھنس گیا۔

کوسٹ کونکورڈیا نامی یہ بحری جہاز جمعہ کی شام گگلو آئی لینڈ کے ساحل کے نزدیک سمندر میں ریت کے ایک بڑے ٹیلے سے ٹکرا گیا۔

حادثے کے بعد جہاز میں سوار افراد زندگی بچانے والے کشتیوں یا تیر کر خشکی پر پہنچے۔

جہاز میں سوار آخری پچاس افراد کو صورتِ حال زیادہ خراب ہونے پر ہیلی کاپٹر کے ذریعے نکالا گیا۔

جہاز میں اٹلی، جرمنی، فرانس اور برطانیہ سے تعلق رکھنے والے تین ہزار دو سو مسافر سوار تھے جبکہ جہاز کا عملہ ایک ہزار افراد پر مشتمل تھا۔

جہاز میں ایک ہزار اطالوی، پانچ سو جرمن اور ایک سو ساٹھ فرانسیسی باشندے سوار تھے۔

جہاز پر موجود ایک مسافر نے اٹلی کی نیوز ایجنسی انسا کو بتایا کہ مسافر جمعہ کو رات کا کھانے کھا رہے تھے جب انہوں نے ایک زور دار آواز سنی جس کے بعد انہیں بتایا گیا کہ حادثے کے نتیجے میں جہاز کے الیکٹرک نظام کو نقصان پہنچا ہے۔

لوسیانو کیسترو نامی مسافر کے مطابق ’ ہم رات کا کھانا کھا رہے تھے جب اچانک جہاز کی بتیاں بند ہو گئیں، ہم نے ایک زور دار آواز سنی اور اس کے بعد چھری کانٹے زمین پر گر گئے۔‘

جہاز کے عملے کے ایک رکن اورڈانو نے بی بی سی کو بتایا کہ ہمیں جہاز چھوڑ دینے کا حکم ملا جس کے بعد ہم نے جنرل ایمرجنسی کا اعلان کیا اور مسافروں کو اکھٹا کیا۔

مسٹر اورڈانو کے مطابق عمر رسیدہ مسافر چلا رہے تھے جس کے بعد انہوں نے دیگر افراد کے ہمراہ سمندر میں چھلانگ لگائی اور تقریباً چار سو میٹر تیر کر خشکی پر پہنچے۔