نیٹو کا ہیلی کاپٹر تباہ، چھ فوجی ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ PAWire

افغانستان میں تعینات نیٹو کے چھ فوجی اہلکار ہیلی کاپٹر کے ایک حادثے میں ہلاک ہوگئے۔

گزشتہ سال اگست میں ہیلی کاپٹر کا بدترین حادثہ ہوا تھا جس میں نیٹو کے تیس اہلکار ہلاک ہوئے تھے۔

نیٹو کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ حادثہ ملک کے جنوبی حصے میں پیش آیا ہے۔

نیٹو کا کہنا ہے کہ حادثے کے وقت کسی دہشت گردی کی کارروائی کی اطلاع نہیں تھی تاہم جمعرات کو ہونے والے اس حادثے کی تحقیقات جاری ہیں۔

نیٹو کے بقول حادثے کی مزید تفصیلات اس وقت تک جاری نہیں کی جائیں گی جب تک ہلاک ہونے والوں کے ورثاء کو مطلع نہیں کردیا جاتا۔

اتحادی فوج ایساف کے ترجمان نے جمعہ کو کہا ’حادثہ کی وجوہات کے بارے میں جانچ کی جارہی ہے تاہم ابتدائی اطلاعات اس جانب اشارہ کرتی ہیں کہ حادثے کے وقت دشمن کی طرف سے کسی قسم کی کوئی کارروائی نہیں ہورہی تھی۔‘

برطانوی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ اس حادثے میں کسی بھی برطانوی فوجی کے ہلاک ہونے کا اطلاع نہیں ہے۔

گزشتہ برس اگست میں مشرقی افغانستان میں ہیلی کاپٹر کے ایک حادثے میں بائیس امریکی بحریہ کے کمانڈوز سمیت تیس فوجی ہلاک ہوئے تھے۔

یہ فوجی چنوک ہیلی کاپٹر میں سوار تھے جو کابل کے مغرب میں واقع صوبۂ واردک میں گر کر تباہ ہوا تھا۔

طالبان نے دعوٰی کیا تھا کہ یہ ہیلی کاپٹر انہوں نے مار گرایا تھا۔

اس حادثے کے دن ہی جنوبی افغانستان کے شہر قندھار میں اتحادی فوج کے زیرِ استعمال ایک ائرپورٹ میں حملے میں سات شہری مارے گئے تھے۔

افغان حکام کا کہنا تھا کہ ایک گاڑی نے ائرپورٹ کی حدود میں داخل ہونے کی کوشش کی جسے گیٹ پر ہی روک لیا گیا جہاں خودکش حملہ آور نے اپنے آپ کو دھماکے سے اڑا دیا تھا۔

اسی بارے میں