اقوامِ متحدہ کے معائنہ کار ایران میں

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption معائنہ کار ایرانی حکام سے بات چیت کے علاوہ ایران کی جوہری تنصیبات کا دورہ بھی کریں گے

جوہری امور کے لیے اقوامِ متحدہ کے نگران ادارے آئی اے ای اے کے معائنہ کاروں کا ایک وفد تین روزہ دورے پر ایران پہنچ گیا ہے۔

وفد کے دورے کا مقصد ایران کے جوہری پروگرام کے بارے میں ان معاملات پر غور کرنا ہے جو اب تک حل طلب ہیں۔

مغربی ممالک کو خدشہ ہے کہ ایران جوہری پروگرام کی آڑ میں جوہری ہتھیاروں کی تیاری پر کام کرنا چاہتا ہے جبکہ ایران کا اصرار رہا ہے کہ اس کا ایٹمی پروگرام پرامن مقاصد کے لیے ہے۔

ایران کا دورہ کرنے والے معائنہ کار ایرانی حکام سے بات چیت کے علاوہ ایران کی جوہری تنصیبات کا دورہ بھی کریں گے۔

اقوامِ متحدہ نے کچھ عرصہ قبل ہی اپنی رپورٹ میں تصدیق کی تھی کہ ایران نے اپنے زیرِ زمین پلانٹ میں یورینیم کی بیس فیصد افزودگی شروع کردی ہے۔

اقوامِ متحدہ کے معائنہ کاروں کا یہ دورہ ایک ایسے موقع پر ہو رہا ہے کہ جب ایران کہہ چکا ہے کہ وہ اپنے متنازع جوہری پروگرام پر چھ طاقتور ممالک سے بات چیت کے لیے تیار ہے۔

ایران اور چھ طاقتور ممالک کے درمیان ایران کے متنازع جوہری پروگرام پر ہونے والے مذاکرات ایک سال سے تعطل کا شکار ہیں۔ ان مذاکرات کا آخری دور ترکی کے شہر استنبول میں ایک سال قبل ہوا تھا۔

مذاکرات کے آخری دور کے بعد ایران پر امریکہ اور یورپی یونین کی جانب سے مزید پابندیاں عائد کر دی گئی تھیں۔

اسی بارے میں