یورپ شدید سردی کی لپٹ میں، یوکرین میں سو سے زیادہ ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ UNIAN
Image caption یوکرین میں جمعہ کو پیش گوئی کی گئی ہے کہ سردی کی شدت میں اضافہ ہوگا

یورپ شدید سردی کی لپیٹ میں ہے اور صرف یوکرین میں حکام کا کہنا ہے کہ برفانی موسم کے دوران ہلاک ہونے والوں کی تعداد ایک سو سے زیادہ ہو چکی ہے۔

یوکرین کے شہر کِیو میں جمعہ کو حکومت نے کہا کہ ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر افراد بے گھر تھے جن میں سے چونسٹھ افراد کی لاشیں سڑکوں سے مِلیں۔

سردی سے ٹِھٹھرنے والے سینکڑوں افراد کو ہسپتال پہنچایا گیا ہے جنہیں علاج مہیّا کیا جا رہا ہے۔

رواں ہفتے مشرقی یورپ کے چند علاقوں میں درجۂ حرارت منفی پینتیس ڈگری سینٹی گریڈ تک گِر چکا ہے۔

جمعرات کو پولینڈ میں بھی کم از کم آٹھ افراد کی ہلاکت کی اطلاع ملی تھی جس کے بعد وہاں سردی سے ٹھٹھر کر ہلاک ہونے والوں کی تعداد سینتیس ہوچکی ہے۔

برفانی موسم کے باعث مشرقی اور وسطی یورپ سے کئی ہلاکتوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

خبررساں ادارے انٹرفیکس کا کہنا ہے کہ روس میں موسمِ سرما کے ماہِ جنوری میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد چونسٹھ تھی تاہم یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ یہ تمام افراد شدید سردی سے ہی ہلاک ہوئے، اِسی طرح سربیا کے پہاڑی گاؤں میں گیارہ ہزار افراد برفانی طوفان اور سرد ہواؤں میں گھرے ہوئے ہیں جبکہ اٹلی میں محکمۂ موسمیات کا کہنا ہے کہ رواں ہفتہ اٹلی میں گزشتہ ستائیس برس میں سب سے زیادہ سرد ہفتہ ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption برفانی موسم کے باعث مشرقی اور وسطی یورپ سے کئی ہلاکتوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں

یوکرین میں جمعہ کو پیش گوئی کی گئی ہے کہ سردی کی شدت میں اضافہ ہوگا جبکہ رات میں توقع ہے کہ شمال اور مغرب میں درجۂ حرارت منفی بتیس ڈگری سینٹی گریڈ تک رہے گا۔

یوکرین میں شدید سردی کی وجہ سے حکومت نے سکول اور کالج بند کردیے ہیں جبکہ ملک بھر میں مختلف مقامات پر تین ہزار کے قریب ایسے مراکز قائم کیے گئے ہیں جہاں گرم ماحول اور خوراک کا انتظام کیا گیا ہے۔

محکمۂ صحت کے حکام نے ہسپتالوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ بے گھر افراد کو ان کے صحتمند ہوجانے کے بعد بھی ہسپتال سے فارغ نہ کریں تاکہ انہیں سردی سے محفوظ رکھا جا سکے۔

یوکرین کے وزیرِاعظم مائکولا ازاروف نے اعلان کیا ہے کہ ملک میں سردی کی شدت کے باعث صرف تین دن کے دوران ایک ارب مکعب میٹر گیس استعمال ہوچکی ہے۔ یوکرین نے سنہ دو ہزار بارہ میں روس سے ستائیس ارب مکعب میٹر گیس خریدنے کا معاہدہ کیا ہے۔

وزیراعظم نے کہا ’ملک پر یہ ایک کڑا وقت ہے۔اور ہم پرعزم ہیں کہ ہم ان مشکلات پر قابو پا لیں گے۔‘

اسی بارے میں