سٹیو جابز کی ایمانداری،اخلاقیات پر سوال

سٹیو جابز تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سٹیو جابز گزشتہ برس انتقال کرگئے ہیں

ایپل کمپنی کے بانی سٹیو جابز کے بارے میں ایف بی آئی کی جانب سے تیار کی گئی فائل عام کر دی گئی ہیں اور ان میں جابز کی ایمانداری اور اخلاقیات پر سوال اٹھائے گئے ہیں۔

سٹیو جابز کی یہ فائل اس وقت تیار کی گئی تھی جب سنہ انیس سو اکیانوے میں جارج بش کے دورِ صدارت میں انہیں صدر کی جانب سے عہدہ دیے جانے پر غور کیا جا رہا تھا۔

ان دستاویزات سے یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ سنہ انیس سو پچاسی میں انہیں بھتہ نہ دینے کی وجہ سے بم حملے کی دھمکی بھی دی گئی تھی۔

دستاویزات سے یہ بھی پتہ چلا ہے کہ سٹیو جابز نے بدھ مذہب قبول کرنے اور منشیات استعمال کرنے کی بات قبول کی تھی۔

ایف بی آئی کے مطابق یہ انکشاف ہوا ہے کہ جابز نے اس بات کا اعتراف کیا تھا کہ انیس سو ستر میں انہوں نے ایل ایس ڈی جیسی ادویات لی تھیں۔

یہ دستاویزات معلومات تک رسائی کی آزادی کے قانون کے تحت جمعرات کو ایف آئی کی ویب سائٹ پر عام کی گئی ہیں۔

ایف بی آئی نے سٹیو جابز کی زندگی کے بارے میں جمع کی گئی معلومات کے بارے میں لکھا ہے ’سٹیو جابز کی ایمانداری پر بہت سے لوگوں نے یہ کہتے ہوئے سوال اٹھائے تھے کہ وہ اپنا ہدف حاصل کرنے کے لیے سچ کو توڑ مروڑ کر پیش کرتے تھے‘۔

سٹیو جابز کے ایک ساتھی کا جنہوں نے جابز پر یہ الزام عائد کیا تھا کہ انہیں ان کے حق کے مطابق فائدہ نہيں دیا گیا ہے، کہنا تھا کہ ’سٹیو جابز ایک ایماندار اور قابل اعتبار شخص تھے لیکن ان کا اخلاقی کردار مشکوک ہے‘۔

وہیں بعض لوگوں کا کہنا تھا کہ جابز ایک ایسے شخص تھے جن کے ساتھ کام کرنا مشکل تھا۔

ایف بی آئی کو جابز کو ایک ساتھی نے بتایا کہ’جابز صحیح معنی میں ایک انجینئر نہیں تھے لیکن ان میں تجربے کرنے اور نئی دریافت کرنے کی صلاحیت تھی‘۔

واضح رہے کہ سٹیو جابز سرطان کی بیماری کے سبب اکتوبر دو ہزار گیارہ میں انتقال کرگئے تھے۔

اسی بارے میں