مصر میں’سول نافرمانی کا دن اور ہڑتال‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ہڑتال کے موقع پر سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے ہیں

مصر میں سیاسی کارکنوں نے سنیچر کو سول نافرمانی کا دن منانے کا اعلان کیا ہے۔ ان کارکنوں کا مطالبہ ہے کہ فوج، تمام اختیارات فوری طور پر سِول انتظامیہ کے حوالے کرے۔

سنیچر کو ہی سیاسی کارکنوں نے سابق صدر حسنی مبارک کی اقتدار سے علیحدگی کا ایک سال پورا ہونے پر ہڑتال کی کال بھی دے رکھی ہے۔

ادھرمصر میں برسرِ اقتدار فوجی کونسل نے کہا ہے کہ ملک میں عدم استحکام پھیلانے کی سازش کی جا رہی ہے۔

جمعہ کو رات گئے جاری کیے جانے والے بیان میں مصری فوجی کونسل کا کہنا ہے کہ سازشیں کرنے والے مصر کی ریاست کو نیچا دکھانے کی کوششیں کر رہے ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ مصر کی فوجی سپریم کونسل انتقالِ اقتدار کے سلسلے میں کسی دھمکی یا دباؤ میں نہیں آئیں گے۔

سپریم کونسل کے مطابق ’ہم دھمکیوں کے سامنے کبھی نہیں جھکیں گے، دباؤ میں نہیں آئیں گے اور کسی سے ڈکٹیشن نہیں لیں گے۔ ہم اِن طوفانوں سے گھبرانے والے نہیں اور صرف خدا کے سامنے جھکیں گے‘۔

خیال رہے کہ مصر میں فوجی حکومت نے گزشتہ ماہ ان ہنگامی قوانین کو جزوی طور پر ختم کرنے کا اعلان کیا ہے کو کئی دہائیوں سے نافذ تھے۔تاہم مصر کی فوجی کونسل کے سربراہ فیلڈ مارشل محمد حسین تنتاوی کے مطابق ’ٹھگی‘ کے لیے یہ قوانین اب بھی نافذ رہیں گے۔

فوجی حکومت ’ ٹھگی‘ کی اصلاح کو ان لوگوں کے خلاف کارروائی کے لیے استعمال کرتی ہے جو ملک میں سول حکومت کی واپسی کا مطالبہ کرتے ہیں۔

اسی بارے میں