نیلسن منڈیلا کی تصویر والے نوٹوں کی تیاری

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption توقع کی جارہی ہے کہ اس سال کے آخر تک نئے نوٹوں کا اجراء ممکن ہوسکے گا

جنوبی افریقہ اپنے ملک کے کرنسی نوٹ تبدیل کررہا ہے اور اب نئے نوٹوں پر ملک کے پہلے صدر نیلسن منڈیلا کی تصویر ہوگی۔

ترانوے سالہ نیلسن منڈیلا نے ستائیس سال قید میں گزارے اور انہیں گیارہ فروری سنہ انیس سو نوے میں رہائی ملی۔

جنوبی افریقہ کے صدر جیکب زوما نے کہا ’بینک نوٹوں پر نیلسن منڈیلا کی تصویر جنوبی افریقہ کی جانب سے خراجِ تحسین پیش کرنے کی منکسرانہ کوشش ہوگی۔‘

نیلسن منڈیلا کو اپنے ملک پر نسلی عصبیت کی بنیاد پر قابض سفید فام حکمرانوں کے خلاف پرامن مہم چلانے پر سنہ انیس سو ترانوے میں امن کا نوبل انعام دیا گیا۔ وہ بعد میں اپنے ملک کے صدر منتخب ہوئے۔

اپنے قبیلے میں انتہائی محبت سے انہیں ’مادیبا‘ کے نام سے پکارا جاتا ہے اور وہ اب عوامی زندگی سے کنارہ کشی اختیار کر چکے ہیں۔

جنوبی افریقہ کے دارالحکومت پریٹوریا کے مرکزی بینک میں خطاب کرتے ہوئے صدر جیکب زوما نے نیلسن منڈیلا کی رہائی کو امید کے نئے دور کا آغاز قرار دیا۔

’ہم اپنی اس منکسرانہ کوشش سے اپنی انتہائی عقیدت کا مظاہرہ کررہے ہیں کیونکہ انہوں نے اپنی زندگی جنوبی افریقہ کے عوام کی خدمت کے لیے اور انسانیت کے لیے صرف کی۔‘

مرکزی بینک میں نیوز کانفرنس کی پیشگی اطلاع پر جنوبی افریقہ میں تجارتی بازاروں میں کچھ دیر کے لیے ہلچل مچ گئی تھی۔

نئے نوٹوں کے اجراء کے لیے اب تک کسی حتمی تاریخ کا اعلان نہیں کیا گیا ہے۔ تاہم نئے نوٹوں کی چھپائی کا کام شروع کردیا گیا ہے اور توقع کی جارہی ہے کہ اس سال کے آخر تک نئے نوٹوں کا اجراء ممکن ہوسکے گا۔

اسی بارے میں