نائجیریا، چرچ پر خود کش حملہ

Image caption شدت پسند تنظیم بوکو حرام اس سے پہلے بھی گرجا گھروں پر حملے کر چکی ہے

نائجیریا کے شہر جوز کے ایک چرچ پر خود کش کار حملے میں کم از کم تین افراد ہلاک اور درجنوں افراد ہوگئے ہیں۔

عینی شاہدوں نے بتایا ہے کہ حملہ آور نے بارود سے بھری گاڑی چرچ آف کرائسٹ کی بلڈنگ سے اس وقت ٹکرا دی جب وہاں صبح کے وقت عبادت جاری تھی۔

خودکش حملہ آور نے گاڑی کو چرچ کی بلڈنگ سے ٹکرانے کے بعد اسے دھماکے سے اڑا دیا۔

ہلاک ہونے والوں میں باپ اور بیٹا بھی شامل ہیں جو دھماکے کے وقت عبادت میں مصروف تھے۔ایک عورت اس وقت ہلاک ہوگئی جب اس نے خود کش حملہ آور کی گاڑی کو دیکھ کر بھاگ کر چرچ میں پناہ لینے کی کوشش کی۔

نائجیریا کی قومی ایمرجنسی مینجمنٹ ایجنسی نے کہا ہے کہ کم از کم تین افراد ہلاک ہوئے ہیں جبکہ اڑتیس زخمی افراد کو ہسپتال لایا گیا ہے۔

ابھی تک کسی گروہ نے دھماکے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔ شدت پسند تنظیم بوکو حرام پر شک کیا جا رہا ہے۔ بوکو حرام حکومت کا تختہ الٹنے اور ملک میں اسلامی نظام کے مقصد کے حصول کے لیے پہلے بھی متعدد حملے کر چکی ہے۔

.بوکو حرام دو ہزار گیارہ میں کئی بار گرجا گھروں پر حملے کر چکی ہے جن میں ایک سو سے زیادہ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔