’فیس بک‘ سے دو شادیوں کا راز فاش

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

امریکہ میں سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک کے ذریعے دو خواتین کو یہ معلوم ہو گیا کہ وہ دونوں ایک ہی شخص کی بیویاں ہیں۔

یہ راز اس وقت کھلا جب دونوں میں سے ایک خاتون نے فیس بک پر اُس پیشکش کا استعمال کیا جس میں ایسے لوگوں کے نام دیئے جاتے ہیں جنہیں شاید ہم کسی نہ کسی حوالے سے پہچانتے ہوں۔

ایک شخص کی ناراض بیوی نے فیس بک پر اُس کی نئی بیوی کی پروفائل پر کِلک کیا جہاں ان دونوں کی شادی کی تصویر موجود تھیں۔

ایلن ایل اونیل نامی یہ شخص ایک ہی وقت میں دو شادیاں کرنے کے الزامات کے تحت اس ماہ عدالت میں پیش ہوں گے۔

عدالت میں پیش کیے گئے دستاویزات کے مطابق اونیل کا سابق نام ایلن فلک تھا اور انہوں نے دو ہزار ایک میں شادی کی جس کے بعد دو ہزار نو میں ان کی علیحدگی ہوگئی۔ اس کے بعد انہوں نے پہلی بیوی کو بنا طلاق دیئے نام تبدیل کرکے دبارہ شادی کر لی۔

استغاثہ مارک لنڈکوئسٹ نے خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کو بتایا کہ ’پہلی بیوی جب دوسری بیوی کے فیس بک صفحے پر گئیں توانہوں نے وہاں اپنے شوہر اور اس خاتون کی شادی کے کیک کے ہمراہ تصویر دیکھی۔‘

اس کے بعد پہلی بیوی نے اپنے شوہر کی ماں کو فون کیا۔ عدالتی ریکارڈ کے مطابق ایک گھنٹے بعد ہی یہ شخص پہلی بیوی کے گھر پہنچ گیا اور طلاق کی بابت بارہا پوچھنے پر بھی اس نے یہ کہا کہ وہ اب بھی شادی شدہ ہیں۔

الزامات کے مطابق نہ ہی اونیل اور نہ ہی اس کی پہلی بیوی نے طلاق کے لیے درخواست دائر کی تھی۔

اونیل نے مبینہ طور پر اپنی پہلی بیوی سے اس کی دوسری شادی کی بات چھپانے کو کہا اور یہ کہا کہ وہ ’سب کچھ ٹھیک کر دے گا‘۔ تاہم اس کی پہلی بیوی نے یہ بات نہیں مانی اور حکام کو بتا دیا۔

مارک لنڈکوئسٹ کا کہنا ہے کہ ’فیس بک اب ایسے جگہ بن گیا ہے جہاں لوگ ایک دوسرے کے بارے میں چیزیں معلوم کرتے ہیں اور پھر قانون نافذ کرنے والے اداروں کو خبر کر دیتے ہیں۔‘

اگر الزامات ثابت ہو جاتے ہیں تو اونیل کو ایک سال کی قید ہو سکتی ہے۔

اسی بارے میں