دمشق میں دھماکے: ستائیس ہلاک، ستانوے زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

شام کے سرکاری میڈیا کے مطابق دارالحکومت دمشق میں دو بم دھماکوں کے نتیجے میں کم از کم ستائیس افراد ہلاک اور ستانوے زخمی ہوگئے ہیں۔

سرکاری میڈیا نے بم دھماکوں کو دہشتگردوں کا حملہ قرار دیا ہے۔

ابتدائی اطلاعات کے مطابق بارودی مواد سے بھری دو گاڑیوں کو دھماکے سے اڑا دیا گیا۔

رہائشیوں اور حزب اختلاف کے ذرائع کا کہنا ہے کہ سکیورٹی اداروں کی عمارتوں کو ان بم دھماکوں میں ہدف بنایاگیا ہے۔

خیال رہے کہ بم دھماکے شام میں صدر بشارالاسد کے خلاف جاری عوامی تحریک کا ایک سال مکمل ہونے کے دو دن بعد ہوئے ہیں۔

شام میں ایک سال سے جاری بدامنی میں اب تک آٹھ ہزار افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

دریں اثناء دمشق کے مضافات میں ایک بار پھر تشدد کے واقعات شروع ہو گئے ہیں۔

ان علاقوں میں چند ہفتے قبل ہی سکیورٹی فورسز نے شدید لڑائی کے بعد دوبارہ قبضہ حاصل کیا تھا۔

اس کے علاوہ شام کے مختلف علاقوں سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق منحرف فوجیوں اور سکیورٹی فورسز کے درمیان جھڑپیں ہوئیں ہیں۔

شام کے صدر بشارالاسد کا کہنا ہے کہ شامی سکیورٹی فورسز ان مسلح گروہوں کے خلاف کارروائی کر رہی ہیں جو ملک کو عدم استحکام سے دوچار کرنا چاہتے ہیں۔

اسی بارے میں